Thursday , September 21 2017
Home / شہر کی خبریں / آئندہ دس برسوں میں 64 لاکھ افرادی قوت کی ضرورت

آئندہ دس برسوں میں 64 لاکھ افرادی قوت کی ضرورت

حیدرآباد ۔ 18 اگست (سیاست نیوز) ایک سماجی و معاشی سروے میں اس بات کا انکشاف ریاست تلنگانہ میں مزید ترقیاتی اقدامات کرنے کی ضرورت ہے اور آئندہ دس برسوں میں مختلف شعبہ جات میں خدمات انجام دینے کیلئے 64 لاکھ افرادی قوت کی ضرورت ہے۔ریاست کے تازہ سماجی و معاشی حالات کے مدنظر 2017 کیلئے منعقدہ سروے رپورٹ میں مختلف مسائل کاانکشاف ہوا ہے۔ مثلاً خواندگی تناسب میںکمی اور بیروزگار افراد کی تعداد 8.40 لاکھ تک پہنچنا ہے تو دوسری جانب نیشنل اسکل ڈیولپمنٹ کمیشن کی جانب سے منعقدہ ایک اور سروے میں واضح ہوا ہیکہ مستقبل قریب میں کئی شعبہ جات میں غیرمعمولی ترقی ہوگی تو دیگر کئی شعبہ جات میں غیرمعمولی تنزلی بھی آئے گی۔ اگست 2014ء میں حکومت تلنگانہ نے ایک سروے کررہا تھا جس میں اس بات کا انکشاف ہوا ہیکہ 20 فیصد اور 20 تا 29 برس کی عمر 18 فیصد افراد 10 تا 18 برس عمر جبکہ جملہ 65 فیصد کام کے لائق 15 تا 59 برس عمر والے ہیں۔ معاشی ترقی کے تناسب میں اضافہ کیلئے حکومت کی کوششوں کے باوجود کئی مسائل درپیش ہیں۔ تاہم مثبت پہلو یہ ہیکہ وظیفہ حسن خدمت پر سبکدوش ہونے والوں کے مقابل نوجوان نسل کی طاقت میںاضافہ تناسب ہے۔دریں اثناء اس سروے نے حکومت پر واضح کردیا ہیکہ افرادی قوت پر سرمایہ کاری کی ضرورت ہے۔ایسا نہ کرنے کی صورت میںسماج کے اندر بیروزگاروں، انپڑھ اور بیمار افراد میں اضافہ ہوسکتا ہے اور یہ صحتمند سماج کیلئے خطرہ کی گھنٹی سے کم نہیں ہے۔ پیداوار اور افرادی قوت میںاضافہ کیلئے درکار تعلیمی قابلیت تلنگانہ میں ضرورت کے مطابق نہ ہونے کا بھی سروے میں انکشاف ہوا ہے۔ اب ریاست میں کام کے قابل عمر کی تعداد 2.39 کروڑ میں سے 34 فیصد افراد ناخواندہ ہیں۔ علاوہ ازیں باصلاحیت و کام کرنے کی طاقت رکھنے والے بنیادی ضروریات و سہولیات کی ریاست میں عدم فراہمی کا بھی سروے میں انکشاف ہوا ہے۔ سروے نے حکومت پر واضح کردیاہیکہ اس کمی کو دور کرنے کے وسیع تر اقدامات کرنے کی اشد ضرورت ہے۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT