Thursday , September 21 2017
Home / شہر کی خبریں / آئی آئی آئی ٹی میں ایم ایس کیلئے ایک اور طالبہ کو 2.11 لاکھ روپئے کی امداد

آئی آئی آئی ٹی میں ایم ایس کیلئے ایک اور طالبہ کو 2.11 لاکھ روپئے کی امداد

عذرا مسعود کے متاثر کن تعلیمی مظاہرہ پر عامر علی خاں کی پہل ، خداترس دوست کا غیر معمولی اقدام
حیدرآباد ۔ 4 ۔ اگست : ( نمائندہ خصوصی) : ہمارے معاشرے میں حالیہ عرصہ کے دوران تعلیمی شعور پیدا ہوا ہے خاص طور پر ماں باپ اپنے بچوں کی تعلیم پر خصوصی توجہ مرکوز کررہے ہیں ۔ ان میں امیر و غریب سب شامل ہیں ۔ خوشی کی بات یہ ہے کہ غریب اور متوسط خاندانوں میں 90 کے دہے کے بعد غیر معمولی تعلیمی لہر پیدا ہوئی خاص طور پر لڑکیوں کی کامیابی کا تناسب مسلسل بڑھتا جارہا ہے ۔ متحدہ آندھرا پردیش اور پھر تلنگانہ میں ’ سیاست ‘ نے مسلمانوں کی معاشی و تعلیمی ترقی کو یقینی بنانے کے لیے جو تحریک شروع کی ہے اس کے بہتر نتائج ظاہر ہونے لگے ہیں ۔ جہاں تک دختران ملت میں حصول علم کا سوال ہے روزنامہ سیاست نے لڑکوں کے ساتھ ساتھ لڑکیوں کی ہر لحاظ سے حوصلہ افزائی کی اور ضرورت مند طالبات کو بھر پور مالی امداد میں کوئی کسر باقی نہیں رکھی چنانچہ روزنامہ سیاست کی کوششوں سے کئی طالبات کو باوقار تعلیمی اداروں میں داخلے ملے ایسی ہی ہونہار طالبات میں ہمایوں نگر کی رہنے والی عذرا مسعود بھی شامل ہیں ۔ اس لڑکی کو IIIT میں ایم ایس کرنے کے لیے نیوز ایڈیٹر جناب عامر علی خاں کے ہاتھوں 2 لاکھ گیارہ ہزار روپئے حوالے کئے گئے ۔ اس طرح وہ انٹرنیشنل انسٹی ٹیوٹ آف انفارمیشن ٹکنالوجی گچی باولی حیدرآباد میں IIIT میں ایم ایس کریں گی ۔ عذرا مسعود کے والد مسعود علی کوئی کروڑ پتی نہیں ہیں بلکہ سنتوش نگر میں گھڑیوں کی ایک دکان چلاتے ہیں انہوں نے صرف ساتویں جماعت تک تعلیم حاصل کی ۔ جبکہ عذرا کی والدہ نکہت آراء نے ایس ایس سی کیا ہے تاہم اس جوڑے نے اپنے چار بچوں کی تعلیم پر خصوصی توجہ دی نتیجہ میں عذرا کی ایک بہن ڈاکٹر دوسری بہن فزیوتھراپسٹ اور ایک بھائی نے انجینئر بننے میں کامیابی حاصل کی ۔ جب کہ عذرا مسعود نے ایم وی ایس آر انجینئرنگ کالج سے بی ٹیک کیا ۔ اس لڑکی نے بریلینٹ اسکول دلسکھ نگر سے ایس ایس سی کیا اور 566 نمبرات حاصل کئے ۔ نارائنا جونیر کالج نارائن گوڑہ سے انٹر میڈیٹ کرتے ہوئے 920 نمبرات حاصل کئے ۔ بی ٹیک میں انہیں 70 فیصد نشانات حاصل ہوئے چونکہ وہ انفارمیشن ٹکنالوجی میں ایم ایس کرنے کی خواہاں تھیں ایسے میں اس دو سالہ کورس کے لیے تقریباً ساڑھے چار لاکھ روپئے درکار تھے ۔ ان حالات میں وہ ایڈیٹر سیاست جناب زاہد علی خاں اور نیوز ایڈیٹر جناب عامر علی خاں سے رجوع ہوئیں جس پر جناب عامر علی خاں نے اپنے ایک قریبی دوست سے اس ہونہار طالبہ کا ذکر کرتے ہوئے اس کی مدد کرنے کی ترغیب دی اور ان کے اس نیک دل دوست نے یہ کہتے ہوئے عذرا مسعود کے پہلے سال کی مکمل فیس 2.11 لاکھ روپئے ادا کردی کہ وہ یہ کام کسی قسم کے دکھاؤے کے لیے نہیں بلکہ اللہ اور اس کے رسولﷺ کی خوشنودی کے لیے کررہے ہیں ۔ اس لیے اس طالبہ اور کسی اور کو ان کے نام کا حوالہ نہ دیا جائے ۔ واضح رہے کہ گذشتہ ہفتہ بھی ایڈیٹر سیاست جناب زاہد علی خاں کے ایک محسن اور فیض عام ٹرسٹ کے جناب افتخار حسین کے تعاون سے دودھ باولی کی رہنے والی ایک طالبہ ام سہیلہ جمال کو ایم ایس انفارمیشن ٹکنالوجی سال اول کی مکمل فیس ادا کی گئی تھی ۔ راقم الحروف نے عذرا مسعود سے بات کی ۔ اس باحجاب لڑکی نے بتایا کہ آج ہمارے معاشرہ میں لڑکیاں خوب پڑھ رہی ہیں جب کہ لڑکوں کو تعلیمی میدان میں آگے آنا چاہئے ۔ خوشی کی بات یہ ہے کہ ملت میں تعلیمی شعور بیدار ہوا ہے ۔ والدین چاہے امیر ہوں یا غریب تعلیم یافتہ ہوں یا کم تعلیم یافتہ اپنے بچوں کو اچھا پڑھانا چاہتے ہیں ۔ سیاست کے توسط سے مسلم لڑکیوں کے نام اپنے پیام میں عذرا مسعود نے کہا کہ زندگی میں رکاوٹیں بہت آتی ہیں لیکن رکاوٹوں کو دور کرنا ہی اصل کامیابی ہے ۔ یہ رکاوٹیں کبھی غربت کی شکل میں آپ کا راستہ روک دیتی ہیں تو کبھی جہالت کی بھیانک صورت میں آکر ترقی کی راہ میں حائل ہوتی ہیں ۔ ان رکاوٹوں کا بڑے حوصلہ کے ساتھ مقابلہ کرنا چاہئے اور یہ مقابلہ صرف اور صرف حصول علم کے ذریعہ کیا جاسکتا ہے کیوں کہ علم وہ نور ہے جس سے جہالت کی تاریکی دفع ہوجاتی ہے ۔ جناب عامر علی خاں نے عذرا مسعود کے مالی امداد حاصل کرتے وقت کہا کہ یہ صحت مند رجحان ہے کہ دختران ملت اعلیٰ تعلیم حاصل کرتے ہوئے ابنائے وطن کو یہ پیام دے رہی ہیں کہ مسلم لڑکیاں تعلیم کے میدان میں کسی سے پیچھے نہیں ہیں ، انہیں صرف مناسب رہنمائی کی ضرورت ہے اور والدین ہی بہتر انداز میں اپنی اولاد کی رہنمائی کرسکتے ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT