Thursday , October 19 2017
Home / دنیا / آئی ایس آئی ایس مغرب کو نشانہ بنانے ’ڈرٹی بم‘ تیار کررہا ہے

آئی ایس آئی ایس مغرب کو نشانہ بنانے ’ڈرٹی بم‘ تیار کررہا ہے

ضبط شدہ لیاب ٹائپ سے داعش کی سرگرمیوں کا انکشاف، برطانوی اخبار کی رپورٹ
لندن ۔ 18 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) عراق میں سرگرم دولت اسلامیہ کے تعلق سے یہ انکشاف کیا گیا ہیکہ وہ مغربی ممالک کو نشانہ بنانے کیلئے نام نہاد ’’ڈرٹی بم‘‘ تیار کرنے میں مصروف ہے۔ داعش کے پاس سرقہ کردہ نہایت ہی ریڈیو ایکٹیو میٹریل موجود ہونے کی اطلاع ہے۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق یہ ریڈیو ایکٹیو میٹریل جس کو محفوظ مقام پر رکھا جاتا ہے، اس کی تفصیلات ضبط شدہ لیاپ ٹیاپ کمپیوٹر سے ظاہر ہوئی ہے اور یہ ریڈیو ایکٹیو میٹریل لیاپ ٹیاپ کمپیوٹر سائز میں رکھا گیا ہے۔ عراق کے شہر بصرا میں گذشتہ نومبر میں ایک اسٹوریج گودام سے ضبط کردہ لیاپ ٹیاپ سے مزید معلومات حاصل ہوئی ہیں۔ اخبار نے اپنی رپورٹ میں عراق کی سیکوریٹی فورسیس کا حوالہ دیا ہے اور کہا ہے کہ ہم ریڈیو ایکٹیو عناصر سے خوفزدہ ہیں جو داعش کے ہاتھوں میں آ گیا ہے۔ یہ خطرناک ’’ڈرٹی بم‘‘ بنانے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ آئی ایس آئی ایس کے سائنسدانوں نے ریڈیو ایکٹیو میٹریل کو بم بنانے کے میٹریل میں تبدیل کرنے پر کام شروع کردیا ہے۔ گذشتہ تین ماہ کے دوران اس بات کا اندیشہ بڑھ رہا ہے کہ داعش اسمگل شدہ میٹریل کو یوروپ میں سربراہ کرکے یہاں بڑے پیمانے پر دھماکے کرسکتا ہے۔

اخبار کے مطابق یہ میٹریل اصل میں ایک پٹرولیم کمپنی کی جانب سے سائنسی مقصد کیلئے عراق کو لایا گیا تھا۔ آئیل اور گیس پائپ لائن کیلئے یہ میٹریل استعمال کیا جاتا ہے لیکن ماہرین کا اندیشہ ہے اس میٹریل کو کروڈ نیوکلیئر بم بنانے کیلئے تبدیل کیا جاسکتا ہے۔ اگر اس میٹریل کو پرہجوم علاقہ میں رکھ دیا جائے تو سب سے زیادہ جانی نقصان ہوگا۔ اگر اسے کھلا رکھ دیا جائے تو مزید خطرناک بنے گا۔ اس طرح کے میٹریل کھلے مقام پر رکھ کر لوگوں میں سراسیمگی پیدا کی جاسکتی ہے۔ عراقی حکومت کے دستاویزات سے پتہ چلتا ہیکہ عراق کے وزارت ماحولیات نے اس طرح کے میٹریل کے سرقہ کی اطلاع دی ہے۔ بصرہ آپریشن کمانڈس کے ترجمان نے بتایا کہ فوج، پولیس اور انٹلیجنس فورسیس اس میٹریل کے رکھے گئے مقام کا پتہ چلانے کیلئے رات دن کام کررہے ہیں۔ مقامی دواخانوں کو بھی چوکس کردیا گیا ہے تاکہ اس میٹریل سے زخمی ہونے والے افراد کو شریک کرلیا جاتا ہے تو اس کی مکمل تحقیقات کی جائے ۔

TOPPOPULARRECENT