Monday , October 23 2017
Home / Top Stories / آئی سی جے جج کیلئے جسٹس دلویر بھنڈاری کی دوبارہ نامزدگی

آئی سی جے جج کیلئے جسٹس دلویر بھنڈاری کی دوبارہ نامزدگی

کاغذات سکریٹری جنرل انٹونیو گوٹیرس کو پیش کئے گئے، منتخب ہونے پر مزید نو سال خدمات
اقوام متحدہ ۔ 20 جون (سیاست ڈاٹ کام) اقوام متحدہ میں عدلیہ کا کلیدی حصہ سمجھے جانے والے انٹرنیشنل کورٹ آف جسٹس (ICJ) کے جج کیلئے ہندوستان نے جسٹس دلویر بھنڈاری کو ایک بار پھر 9 سالہ میعاد کیلئے نامزد کیا ہے۔ 69 سالہ بھنڈاری کا اپریل 2012ء میں انتخاب عمل میں آیا تھا جہاں انہیں سلامتی کونسل اور جنرل اسمبلی نے متفقہ طور پر منتخب کیا تھا۔ انٹرنیشنل کورٹ آف جسٹس کو ورلڈ کورٹ بھی کہا جاتا ہے جو نیدرلینڈس کے دی ہیگ سے اپنی سرگرمیاں انجام دیتی ہے۔ جسٹس بھنڈاری کی موجودہ میعاد فروری 2018ء تک ہے۔ ہندوستان نے جسٹس بھنڈاری کی نامزدگی کا کل ہی ادخال کیا اور کاغذات سکریٹری جنرل انٹونیو گوٹیرس کو پیش کئے گئے حالانکہ کاغذات کی نامزدگی مدت ختم ہونے میں اب کافی دن باقی ہیں یعنی آخری دن 3 جولائی مقرر کیا گیا ہے۔ یہاں اس بات کا تذکرہ بھی ضروری ہیکہ آئی سی جے کے انتخابات نومبر میں منعقد کئے جائیں گے اور اگر رائے دہی کے ذریعہ جسٹس بھنڈاری منتخب ہوگئے تو وہ مزید 9 سالوں کیلئے اپنے فرائض انجام دیں گے۔

اپنی پہلی میعاد کے دوران موصوف کافی مؤثر ثابت ہوئے تھے جہاں انہوں نے کم و بیش 11 معاملوں میں اپنی شخصی رائے پیش کی تھی جن میں میری ٹائم تنازعات، انٹارکٹیکا، نسل کشی کے جرائم، نیوکلیئر ترک اسلحہ اور دہشت گردی کیلئے مالیہ کی فراہمی قابل ذکر ہیں۔ آئی سی جے سے وابستگی سے قبل مسٹر بھنڈاری ہندوستان کی اعلیٰ سطحی عدلیہ کے زائد از 20 سال تک جج رہے جبکہ سپریم کورٹ آف انڈیا کے سینئر جج کی حیثیت سے بھی انہوں نے کام کیا۔ یہاں اس بات کا تذکرہ بھی دلچسپ ہوگا کہ آئی سی جے 15 ججس پر مشتمل ہے جنہیں 9 سال کی میعاد کیلئے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی اور سلامتی کونسل منتخب کرتے ہیں حالانکہ رائے دہی ایک ساتھ ہوئی ہے لیکن انتخاب علحدہ ہوتا ہے۔ انتخاب کیلئے امیدوار کے لئے یہ لازمی ہیکہ اسے جنرل اسمبلی اور سلامتی کونسل دونوں مجالس میں واضح اکثریت حاصل ہو۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT