Sunday , September 24 2017
Home / کھیل کی خبریں / آئی پی ایل ڈرافٹ سسٹم میں آج دھونی و دیگر دستیاب

آئی پی ایل ڈرافٹ سسٹم میں آج دھونی و دیگر دستیاب

دو نئی ٹیموں پونے اور راجکوٹ کو معطل سی ایس کے اور آر آر کے 50 کھلاڑیوں میں سے انتخاب کا موقع
ممبئی ، 14 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) ہندوستان کے لمیٹیڈ اوورز کیپٹن ایم ایس دھونی کے ساتھ اُن کے ٹیم ساتھی رویندر جڈیجا، اجنکیا رہانے، سریش رائنا اور روی چندرن اشوین کے بشمول دیگر کھلاڑی دو نئی آئی پی ایل ٹیموں کیلئے ڈرافٹ سسٹم کے تحت دستیاب رہیں گے، جو کل یہاں منعقد شدنی ہے۔ سنجیو گوئنکا کے نیو رائزنگ نے پونے فرنچائز کی بولی جیتی جبکہ اِنٹکس کو راجکوٹ کیلئے بولی میں کامیابی ملی ۔ یہ 8 ڈسمبر کو دہلی میں بولی کے معکوس عمل کا نتیجہ رہا، جس کے ذریعے معطل ٹیموں چینائی سوپر کنگس اور راجستھان رائلز سے پیدا شدہ خلا کو پُر کیا گیا، جو 2016ء اور 2017ء کے اگلے دو ایڈیشنس کیلئے انتظام ہے۔ ٹوئنٹی 20 لیگ کے دو نئے فرنچائز کی جانب انتخاب کیلئے دیگر ٹاپ انٹرنیشنل اسٹارز بھی دستیاب رہیں گے جیسے نیوزی لینڈ کے برینڈن میکلم، آسٹریلیا کے شین واٹسن (جو اَب انٹرنیشنل کرکٹ سے سبکدوش ہوچکے ہیں) اور موجودہ کیپٹن اسٹیون اسمتھ، اور ویسٹ انڈیز کے آل راؤنڈر ڈوین براوو ۔ یہ سب جملہ دستیاب 50 کرکٹرز کا حصہ ہیں، جو معطل آئی پی ایل ٹیموں سی ایس کے اور آر آر کیلئے رواں سال کے اوائل گزشتہ ایڈیشن میں کھیل چکے ہیں۔پونے کو ڈرافٹ سسٹم میں کھلاڑیوں کے پہلے انتخاب کا موقع دیا جائے گا کیونکہ وہ دو سال کیلئے نئی ٹیم کی خریداری کیلئے اقل ترین بولی دہندگان (منفی بولیاں) رہے ۔ یہ ڈرافٹ ممبئی کرکٹ اسوسی ایشن کے ریکرئیشن سنٹر واقع باندرہ کُرلا کامپلکس میں منعقد کیاجارہا ہے۔ دو نئے فرنچائز کیلئے بولی کا عمل چینائی سوپر کنگس اور راجستھان رائلز کی معطلی سے ضروری ہوگیا تھا۔ یہ معطلی اُن ٹیموں کے بعض عہدہ داروں اور شریک مالکین کے 2013ء آئی پی ایل اسپاٹ فکسنگ اسکینڈل میں رول کی پاداش میں ہوئی جبکہ اس معاملے کی تحقیقات سپریم کورٹ کی مقررہ جسٹس (ریٹائرڈ) آر ایم لودھا کمیٹی نے کی۔ تاہم سی ایس کے اور آر آر دونوں ٹیموں کو اُن کی معطلی بھگتنے کے بعد لیگ میں واپسی کی اجازت دی جائے گی۔ یہ دو معطل فرنچائز کے کرکٹرز میچ یا میچز کھیل چکے اور اب تک نہ کھیلنے والوں کے دو گروپوں میں منقسم کئے جائیں گے اور سرکردہ ناموں کو ڈرافٹ سسٹم کے ذریعے فروخت کیا جائے گا۔ دونوں نئی ٹیموں کو کھلاڑیوں کی خریداری کیلئے اقل ترین 40 کروڑ روپئے اور اعظم ترین 66 کروڑ روپئے دستیاب رہیں گے۔ بی سی سی آئی کے ایک ذریعہ نے کہا کہ جو کھلاڑی فروخت نہ ہوں پائیں، وہ آئندہ فبروری کے پلیئرس آکشن میں منتخب کئے جاسکیں گے۔

TOPPOPULARRECENT