Monday , August 21 2017
Home / شہر کی خبریں / آبپاشی تنازعات کی خوشگوار یکسوئی سے دو تلگوریاستوں کا اتفاق

آبپاشی تنازعات کی خوشگوار یکسوئی سے دو تلگوریاستوں کا اتفاق

ہریش راؤ کے ٹیلی فون کال پر آندھرا پردیش کے وزیر آبپاشی کا مثبت ردعمل
حیدرآباد ۔ 4 ۔ مئی : ( این ایس ایس ) : دو تلگو ریاستوں کے درمیان آبپاشی پراجکٹوں پر پیدا شدہ بحران کو حل کرنے کے لیے آندھرا پردیش اور تلنگانہ کے وزرائے آبپاشی نے خوشگوار و دوستانہ حل کی تلاش کے لیے بات چیت سے اتفاق کرلیا ہے ۔ تلنگانہ کے وزیر آبپاشی ٹی ہریش راؤ نے آج اس ضمن میں آندھرا پردیش کے اپنے ہم منصب دیونینی اوما مہیشورم راؤ سے ٹیلی فون پر ربط پیدا کیا ۔ جس پر دیونینی نے مثبت ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے مذاکرات کے ذریعہ مسئلہ کی یکسوئی سے اتفاق کیا ۔ دیونینی نے مذاکرات کے لیے تاریخ اور مقام کے تعین کو قطعیت دینے کی خواہش کا اظہار کرتے ہوئے اپنے اس ارادہ کا اظہار کیا کہ مستقبل قریب میں وہ مرکزی وزیر آبی وسائل اوما بھارتی کی موجودگی میں نئی دہلی میں بات چیت کے لیے تیار ہیں ۔ دونوں وزراء نے تلگو ریاستوں کے درمیان کچھ عرصہ سے جاری اختلافات کے خوشگوار حل سے اتفاق کیا ۔ ہریش راؤ اور دیونینی اوما مہیشور کی ٹیلی فونی بات چیت کو نمایاں اہمیت حاصل ہوگئی ہے کیوں کہ آندھرا پردیش کے چیف منسٹر این چندرا بابو نائیڈو نے اپنی کابینہ کے اجلاس میں دھمکی دی تھی کہ پالامورو ، رنگاریڈی لفٹ اسکیم پر وہ سپریم کورٹ سے رجوع ہوں گے اور مرکز سے بھی شکایت کریں گے ۔ جس کے جواب میں تلنگانہ کے چیف منسٹر کلواکنٹلہ چندر شیکھر راؤ نے بھی شدید برہمی کا اظہار کیا تھا اور چندرا بابو نائیڈو پر الزام عائد کیا تھا کہ وہ تلنگانہ کے پراجکٹس کو روکنے کی سازشیں کررہے ہیں ۔ تاہم اب ہریش راؤ اور دیونینی اوما مہیشور نے اس مسئلہ کو کلیدی آبی کونسل سے رجوع کرنے سے اتفاق کرلیا ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT