Monday , June 26 2017
Home / Top Stories / آدتیہ ناتھ فرقہ پرستی اور عدم رواداری کی علامت: چیف منسٹر کیرالا

آدتیہ ناتھ فرقہ پرستی اور عدم رواداری کی علامت: چیف منسٹر کیرالا

ہندوستانی سیاست کیلئے دھبہ ، بی جے پی کے ایجنڈہ رام مندر کو دوبارہ اُٹھانے فرقہ وارانہ کارڈ کھیلا جارہا ہے،وجین کا خطاب
حیدرآباد۔ 19 مارچ (سیاست نیوز) چیف منسٹر کیرالا پنرائی وجین نے آج چیف منسٹر اترپردیش یوگی آدتیہ ناتھ کو فرقہ پرستی اور عدم رواداری کی علامت قرار دیا۔ انہیں چیف منسٹر اترپردیش کیلئے منتخب کرنے پر بی جے پی کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا۔ آج شام یہاں جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے چیف منسٹر کیرالا نے کہا کہ اب ہمیں یوگی آدتیہ ناتھ کی شکل میں چیف منسٹر ملا ہے جس نے فرقہ وارانہ کشیدگی کو ہوا دینے کیلئے ان پر الزامات عائد کئے تھے۔ اس شخص کو اترپردیش کا چیف منسٹر بنایا جانا، ہندوستانی سیاست کیلئے بدنما داغ ہے۔ وہ ہمیشہ ہی فرقہ وارانہ تشدد ، فسادات، عدم رواداری اور نفرت پھیلانے کی علامت رہے ہیں۔ یہ جلسہ عام سی پی آئی ایم تلنگانہ یونٹ سیکریٹری تمینینی ویرا بھدرم کی زیرقیادت مہا پدیاترا کے اختتام کے موقع پر منعقد کیا گیا تھا۔ چیف منسٹر کیرالا نے اپنے خطاب میں کہا کہ گورکھپور سے بی جے پی ٹکٹ پر پانچ مرتبہ منتخب ہونے والے رکن پارلیمنٹ جو اپنی ہندوتوا کٹر پسندی کیلئے جانے جاتے ہیں، چیف منسٹر اترپردیش کی حیثیت سے حلف لے چکے ہیں۔ اس ملک کی سب سے گنجان آبادی والی ریاست کے 21 ویں چیف منسٹر کی حیثیت سے ان کی حلف برداری افسوسناک ہے۔ جس طرح کی سیاست آدتیہ ناتھ کررہے ہیں اور جس طرح کی سیاست کے وہ چمپین ہیں، وہ ہندوستانی فرقہ وارانہ ہم آہنگی سے کوسوں دور ہے۔ ہندوستانی سیاست میں جو فرقہ وارانہ ہم آہنگی پائی جاتی ہے، اب آدتیہ ناتھ اسے تہس نہس کردیں گے۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ آدتیہ ناتھ نے 2007ء میں سلسلہ وار فرقہ وارانہ فسادات پھیلائے تھے، اس سلسلے میں وجین نے یاد دلایا کہ اس زعفرانی لیڈر نے بالی ووڈ اداکار شاہ رخ خاں کا پاکستانی دہشت گرد حافظ سعید سے تقابل کیا تھا۔ انہوں نے عامر خاں اور مدر ٹریسا کے خلاف بھی زہر افشانی کی تھی۔ سی پی آئی ایم لیڈر نے مزید کہا کہ آدتیہ ناتھ نے یہ بھی کہا تھا کہ جو لوگ سوریہ نمسکار نہیں کرنا چاہتے ہیں، وہ پاکستان چلے جائیں۔ چیف منسٹر کیرالا وجین نے آدتیہ ناتھ پر الزام عائد کیا کہ بی جے پی کے اصل ایجنڈے ایودھیا مسئلہ کو دوبارہ اُٹھاکر فرقہ وارانہ منافرت پھیلانے کی کوشش کررہے ہیں۔ انہوں نے ہمیشہ ہی سیاست کو فرقہ وارانہ رنگ دینے کی کوشش کی ہے۔ دلتوں، پسماندہ طبقات اور اقلیتوں کے تعلق سے ان کی رائے خطرناک ہے۔ اس طرح کا فرقہ وارانہ پس منظر رکھنے والے شخص کو اُترپردیش جیسی بڑی ریاست کا چیف منسٹر بنانا افسوسناک ہے۔ اس طرح بی جے پی پورے ملک کو یہ پیام دینا چاہتی ہے کہ وہ فرقہ وارانہ فسادات برپا کرکے اقتدار پر قبضہ کرنے کی کوششوں کو جاری رکھے گی۔ بائیں بازو لیڈر نے مزید الزام عائد کیا کہ بی جے پی واحد پارٹی ہے جو سکیولرازم اور جمہوریت کا گلا گھونٹ رہی ہے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT