Saturday , September 23 2017
Home / Top Stories / آدھار بل لوک سبھا میں منظور ، بڑی بچت ہوگی : حکومت

آدھار بل لوک سبھا میں منظور ، بڑی بچت ہوگی : حکومت

حکومتی رعایتوں اور فوائد کی منتقلی کو قانونی تائید فراہم ، نقائص دور ہوں گے، وزیر فینانس کا بیان
نئی دہلی ، 11 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) لوک سبھا نے آج آدھار بل کو رقمی بل کے طور پر منظور کرلیاجبکہ اپوزیشن کے اعتراضات مسترد کردیئے گئے۔ اسے ندائی ووٹ کے ذریعے منظور کیا گیا۔ یہ بل حکومتی رعایتوں اور فوائد کی منتقلی کیلئے منفرد شناختی نمبر (آدھار) کو قانونی تائید و حمایت فراہم کرتی ہے۔ وزیر فینانس ارون جیٹلی نے کہا کہ نقائص اور دیگر خامیوں کو دور کرتے ہوئے ہزاروں کروڑ  روپئے بچائے جاسکیں گے ۔ انھوں نے اپوزیشن کا یہ مطالبہ مسترد کردیا کہ اس بل کو اسٹانڈنگ کمیٹی سے رجوع کیا جائے ۔ نیز یہ بات بھی قبول نہیں کی کہ آدھار کو ’’عمومی نگرانی‘‘ اور ’’نسلی صفائی‘‘ کیلئے ممکنہ طور پر استعمال کیا جاسکتا ہے۔ کانگریس کے یہ اعتراض کو مسترد کرتے ہوئے کہ اس قانون سازی کو رقمی بل میں تبدیل کیا گیا جس کا مقصد راجیہ سبھا میں ووٹنگ سے بچنا ہے جہاں حکومت کو اکثریت حاصل نہیں، وزیر فینانس نے کہا کہ آدھار حقیقی معنی میں رقمی بل ہے۔ انھوں نے آدھار بل 2016ء پر مختصر مباحث کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ یہ بل ریاستوں کو اختیار دے گا کہ ریاست کے وسائل کو مستحق لوگوں میں تقسیم کریں اور وہ وسائل بچائیں جو غیرمستحق لوگ حاصل کرجاتے ہیں۔ اس بل کا اثر مرکز اور ریاستی حکومتوں پر پڑے گا جس سے ہزاروں کروڑ روپئے کی بچت ہوگی۔ آدھار کو رقمی بل کے طور پر متعارف کرانے کی مدافعت کرتے ہوئے وزیر موصوف نے کہا کہ کوئی قانون سازی جس کے نتیجے میں رقم سرکاری خزانہ میں جاتی اور وہاں سے نکلتی ہے، رقمی بل قرار پاتا ہے۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT