Thursday , July 27 2017
Home / ہندوستان / آدھار کارڈ: 1000 دیہی عوام کی تاریخ پیدائش ’’یکساں ‘‘

آدھار کارڈ: 1000 دیہی عوام کی تاریخ پیدائش ’’یکساں ‘‘

منفرد قومی شناختی دستاویز میں فاش غلطیوں کی شکایات کا سیلاب
الہ آباد۔ 23 مئی (سیاست ڈاٹ کام) الہ آباد سے قریب موضع کنجاسہ کے ہزاروں عوام کو یہ دیکھ کر اس وقت حیرانی ہوئی جب انہوں نے اپنا نیا آدھار کارڈ حاصل کیا تو اس میں سے 1000 دیہی باشندوں کی یکساں تاریخ پیدائش درج تھی۔ تمام لوگ یکم جنوری کو ہی پیدا ہونا بتایا گیا تھا۔ اس لئے یہ لوگ ایک ہی مقام پر اپنا یکساں یوم پیدائش کی سالگرہ منائیں گے تاہم اس فاش غلطی کا احساس اس وقت ہوا جب پتہ چلا کہ آدھار کارڈ بنانے کے دوران ٹیکنیکل خرابی کی وجہ سے صورتحال تبدیل ہوگئی۔ الہ آباد سے صرف 50 کیلومیٹر دور موضع کنجاسہ میں ہر پانچواں فرد یہ دیکھ کر حیران ہوا کہ اس کی تاریخ پیدائش یکم جنوری لکھی گئی ہے جو اس کی سرکاری تاریخ پیدائش ہے۔ آدھار کارڈ میں اس طرح کی غلطیوں کی شکایات کا جب سیلاب اُمڈ پڑا تو حکام بھی پریشان ہوگئے۔ مقامی افراد نے شکایت کی کہ ان کے آدھار کارڈ پر ان کی اصل تاریخ پیدائش درج نہیں ہے۔ حکام نے اس غلطی کی تحقیقات کا حکم دیا ہے۔ غلطی کو فوری دور کرنے کی ہدایت بھی دی گئی ہے۔ تقریباً 1000 دیہی عوام نے آدھار کارڈ میں اپنی تاریخ پیدائش غلط درج کرنے کی شکایت کی ہے۔ بلاک ڈیولپمنٹ آفیسر نیرج دوبے نے بتایا کہ یہ قیاس کیا جارہا ہے کہ ایک ایسا سافٹ ویر تیار کیا گیا ہے جو اصل تاریخ پیدائش سے واقف نہیں ہوتے، انہیں خودبخود یکم جنوری کی تاریخ دی جاتی ہے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT