Thursday , March 30 2017
Home / Top Stories / آدھار کا غلط استعمال ہوسکتا ہے

آدھار کا غلط استعمال ہوسکتا ہے

زیراکس پیش کرنے کی وجہ ، تاریخ اور وقت درج کرنا ضروری
نئی دہلی ۔ 16 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) بڑی کرنسی کا چلن بند کرنے کے پیش نظر عوام کی جانب سے آدھار کا بہت زیادہ استعمال ہورہا ہے۔ ایسے میں آدھار جاری کرنے والے ادارے (UIDAI) نے عوام کو خبردار کیا ہیکہ وہ آدھار زیراکس فراہم کرنے کا مقصد واضح طور پر درج کرے تاکہ اس کا بیجا استعمال نہ ہوسکے۔ ادارہ کے چیف ایگزیکیٹیو آفیسر اجئے بھوشن پانڈے نے ایک بیان میں کہا کہ عوام کی کثیر تعداد بینکوں میں آدھار کی زیراکس کاپی پیش کررہی ہے۔ ضروری ہیکہ وہ اس کا مقصد اور تاریخ و وقت کا لازمی طور پر اندراج کرے۔ یہی نہیں بلکہ جہاں بھی آدھار کی زیراکس پیش کی جائے اس پر مقصد واضح طور پر تحریر کیا جانا چاہئے۔ تاہم انہوں نے کہاکہ آدھار میں درج شناختی نمبر منفرد نوعیت کا ہوتا ہے اس لئے بیجا استعمال کا امکان کم ہے۔

 

۔50 ہزار سے زائد رقم پر پیان کارڈ لازمی
آر بی آئی کی تمام بینکوں کو ہدایت
نئی دہلی ۔ 16 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) ریزرو بینک آف انڈیا نے تمام بینکوں کو ہدایت دی ہیکہ وہ اس بات کو یقینی بنائیں کہ 50,000 روپئے سے زائد نقد رقم جمع کرانے کی صورت میں پیان کارڈ (PAN) کی نقل پیش کریں۔ بڑی کرنسی بند کرنے کے فیصلہ کے تناظر میں ٹیکس قواعد پر عمل آوری یقینی بنانے کے مقصد سے یہ ہدایت جاری کی گئی۔ آر بی آئی نے ایک اعلامیہ میں کہا کہ تمام رقمی لین دین کے سلسلہ میں صارفین کو پیان نمبر دینا ضروری ہوگا۔ مقررہ قواعد کے مطابق کوئی بھی شخص بینک یا کوآپریٹیو بینک ، پوسٹ آفس، ندھی یا غیربینکنگ مالیاتی کمپنی میں رقم جمع کرائے اور یہ 50,000 سے زائد یا مالیاتی سال کے دوران 5 لاکھ روپئے سے زائد ہو تو ایسی صورت میں پیان کارڈ لازمی ہے۔ بڑی کرنسی کا چلن بند کرنے کے فیصلہ کے بعد رقم جمع کرانے والوں پر حکومت کڑی نظر رکھے ہوئے ہے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT