Tuesday , September 19 2017
Home / شہر کی خبریں / آر ایس ایس کی نفرتوں کے خلاف محبت کا پیغام

آر ایس ایس کی نفرتوں کے خلاف محبت کا پیغام

اے آئی ایس ایف کی ریالی ، عوام سے غیر معمولی ردعمل
حیدرآباد /24 جولائی ( سیاست نیوز ) ملک میں جاری نفرتوں کے ماحول اور فرقہ پرست طاقتوں کی سازش کے خلاف جاری اے آئی ایس ایف کی اس ریالی کو زبردست عوامی ردعمل حاصل ہورہا ہے ۔ کنیا کماری سے شروع کردہ یہ ریالی کیرلہ پانڈیچری ٹاملناڈو سے ہوتی ہوئی کرناٹک میں داخل ہوگئی ہے ۔ بائیں بازو کی اس طلبہ تنظیم کی جانب سے جاری امن ریالی میں آئی ایس ایس کی نفرتوں کے خلاف محبت کا پیغام دیا جارہا ہے اور طلبہ تنظیم نے یہ عہد کیا کہ وہ ملک سے فرقہ پرستی کی جڑوں کو اُکھاڑ دیں گے ۔ اس موقع پر صدر ایس آئی ایس ایف سید ولی اللہ قادری نے کہا کہ ملک میں آر ایس ایس فرقہ پرستی کی مدد سے ہندو راشٹرا کے خفیہ ایجنڈہ کو عمل میں لایا جارہا ہے ۔ لیکن طلبہ تنظیم اے آئی ایس ایف اس ایجنڈہ پر کبھی عمل ہونے نہیں دے گی ۔ انہوں نے اپنے بیان میں کہا کہ آر ایس ایس کو یاد دلایا کہ ملک گاندھی اور بھگت سنگھ کے نظریات والا ہندوستان ہے اور یہ کبھی گوڑسے والے ہندوستان میں بدل نہیں سکتا ۔ انہوں نے آر ایس ایس کو سخت تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ آر ایس ایس چاہتی ہے کہ گاندھی کے قاتلوں کا ملک بن جائے ۔ انہوں نے کہا کہ ملک میں آج نرمی کی کوئی بات نہیں کرتا ۔ دلت اور مسلمانوں کو گائے کے نام پر ہلاک کیا جارہا ہے ۔ غنڈہ عناصر گائے کے نام پر دہشت مچائے ہوئے ہیں اور انہیں کھلی چھوٹ دی جارہی ہے ۔ آر ایس ایس کی قیادت میں مرکزی حکومت نے خاموشی کے ذریعہ سیکولرالزم کے مطلب ہی کو بدل دیا ۔ سید ولی اللہ قادری نے مزید کہا کہ اس امن ریالی کو زبردست عوامی تائید حاصل ہو رہی ہے ۔ چار ریاستوں کے تجربات کو بیان کرتے ہوئے قومی صدر نے کہا کہ غیر متوقع عوامی ردعمل حاصل ہو رہا ہے ۔ انہوں نے ریالی میں نوجوان نسل کی شرکت اور طلبہ برادری کے جوش کو ملک کے حق میں خوش آئند اقدام قرار دیا اور کہا کہ لاکھوں کی تعداد میں عوام ریالی کا استقبال کر رہے ہیں ۔ قومی صدر اے آئی ایس ایف نے کہا کہ عوام مرکزی حکومت کو پالیسیوں اور اقدامات سے عاجز آچکے ہیں اور اس حکومت کے انتخاب پر پچھتاوے کا اظہار کر رہے ہیں ۔ مسٹر قادری نے کہا کہ ریالی میں رکاوٹوں کی کوششیں بھی جاری ہیں تاہم عوامی ردعمل نے ارباب مجاز امن ریالی کو روکنے میں ناکام ہیں ۔ وانم بڑی ریاست ٹاملناڈو سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ملک میں بے روزگاری دن بہ دن بڑھتی جارہی ہے ۔ نہ ہی روزگار اور نہ ہی ترقیاتی اقدامات کئے جارہے ہیں ۔ بلکہ ایسے مسائل کو زور پکڑتا دیکھ کر عوام میں فرقہ پرستی کی مدد سے نفرت کو ہوا دی جارہی ہے ۔ دلت اور مسلمانوں پر جاری مظالم کے خلاف اٹھائی گئی آواز کو مثالی ردعمل حاصل ہو رہا ہے ۔ اور کہا کہ عوام کو اب یہ بات سمجھا رہی ہے کہ فرقہ پرستی کی آڑ میں ناکامیوں کی پردہ پوشی کیلئے ملک میں نفرت کے ماحول کو پیدا کیا جارہا ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ امن ریالی کا مقصد ملک کی سالمیت کو برقرار رکھنا اور فرقہ پرستوں کو شکست دینا ہے ۔ طلبہ تنظیم کی امن ریالی 12 ستمبر تک جاری ہے گی اور آخری دن پنجاب میں پروگرام ہوگا ۔ ریالی کا اختتام بھی پنجاب ہی میں ہوگا ۔ جہاں ریالی شہید آزادی ہند بھگت سنگھ ، اشفاق اللہ خان ، راج گرو اور سکھ دیو کو خراج عقیدت پیش کرے گی ۔ اس ریالی میں کنیاکمار ( جے این یو ) لیڈر کے علاوہ دہلی سے ایرا چیتا راجہ آندھراپردیش سے لنن بابو تلنگانہ سے سید ولی اللہ قادری بہار سے بسواجیت کمار پنجاب سے وکی مہیشوری ٹامل ناڈو سے ترملائی ، مغربی بنگال سے اندروپتی جھارکھنڈ سے آفتاب عالم خان و دیگر موجود تھے ۔

TOPPOPULARRECENT