Thursday , September 21 2017
Home / شہر کی خبریں / آر ٹی سی کو منافع بخش بنانے متحدہ مساعی پر زور

آر ٹی سی کو منافع بخش بنانے متحدہ مساعی پر زور

عہدیداروں اور ملازمین میں تال میل کے بغیر ترقی نا ممکن : کے سی آر
حیدرآباد۔/17 جون، ( سیاست نیوز) چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے کہا کہ آر ٹی سی کو منافع بخش بنانے کیلئے عہدیداروں اور ملازمین کو متحدہ طور پر مساعی کرنی چاہیئے۔ چیف منسٹر نے آج آر ٹی سی کی ترقی کے مسئلہ پر وسیع تر جائزہ اجلاس منعقد کیا تھا جس میں وزیر ٹرانسپورٹ مہیندر ریڈی، آر ٹی سی کے منیجنگ ڈائرکٹر رمنا راؤ، ایکزیکیٹو ڈائرکٹرس ، ڈیویژنل منیجرس ، ریجنل منیجرس اور دیگر عہدیداروں نے شرکت کی۔ چیف منسٹر نے کہا کہ آر ٹی سی کی ترقی کیلئے انہوں نے تجربہ کار صدرنشین اور اعلیٰ عہدیداروں کو نامزد کیا ہے وہ چاہتے ہیں کہ آر ٹی سی خسارہ کے بجائے منافع بخش ادارہ میں تبدیل ہوجائے۔ عہدیداروں کے تجربہ سے فائدہ اٹھاتے ہوئے اس ادارہ کو ترقی کی راہ پر گامزن کیا جاسکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر عہدیدار اور ملازمین اس بات کا تہیہ کرلیں تو اس ادارہ کو منفعت بخش بنانا کوئی مشکل نہیں ہے۔ عہدیداروں اور ملازمین کو چاہیئے کہ وہ پوری سنجیدگی کے ساتھ اس مقصد کی تکمیل کیلئے کام کریں۔ چیف منسٹر نے کہا کہ آر ٹی سی کی ترقی اور آمدنی میں اضافہ کیلئے جامع منصوبہ تیار کیا جانا چاہیئے۔ کے سی آر نے کہا کہ وزیر ٹرانسپورٹ کی حیثیت سے انہوں نے ہر ڈپو کی سطح پر آر ٹی سی کی کارکردگی کا جائزہ لیا تھا اور انہیں آر ٹی سی کو درپیش مسائل کا بخوبی اندازہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ وزیر ٹرانسپورٹ کی حیثیت سے انہوں نے آر ٹی سی کو منافع بخش ادارہ کی طرح کامیابی سے چلایا تھا۔انہوں نے کہا کہ مینجمنٹ اور ورکرس باہمی تال میل کے ذریعہ ادارہ کی ترقی کو یقینی بناسکتے ہیں انہیں ایک خاندان کی طرح آپس میں مل کر کام کرنا چاہیئے۔ چیف منسٹر نے کہا کہ آر ٹی سی میں 56000 ملازمین ہیں جن میں صرف 1000 عہدیدار ہیں اور 55 ہزار ملازمین ہیں۔ اس ادارہ کا تحفظ کرنا ملازمین کی ذمہ داری ہے۔ حکومت اس سلسلہ میں ہر ممکن تعاون کیلئے تیار ہے۔ انہوں نے کہا کہ حیدرآباد میں آر ٹی سی کو گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن کے تحت کیا گیا ہے اور نئی بسیں فراہم کی گئی ہیں۔ ملازمین کو 44 فیصد فٹمنٹ دیا گیا اس کے علاوہ مزید کئی مراعات دی جارہی ہیں۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT