Wednesday , August 16 2017
Home / ہندوستان / آزادانہ اور منصفانہ انتخابات کی عدالتی ہدایت کی ستائش

آزادانہ اور منصفانہ انتخابات کی عدالتی ہدایت کی ستائش

حکومت کو ہائیکورٹ کی ہدایت پر بی جے پی کا ردعمل ، سرکاری عہدیداروں کی تبدیلی کا مطالبہ
لکھنؤ ۔7 فروری (سیاست ڈاٹ کام) الہ آباد ہائیکورٹ نے حکومت یوپی کو آزادانہ اور منصفانہ انتخابات کیرانا اور ریاست کے دیگر حساس علاقوں میں یقینی بنانے کی ہدایت دی ہے۔ اس طرح بی جے پی کو  تقویت حاصل ہوئی جس نے ڈی جی پی جاوید احمد اور سماج وادی پارٹی امیدواروں کیلئے کام کرنے والے دیگر عہدیداروں کی علیحدگی کا مطالبہ کیا۔ یوپی بی جے پی کے جنرل سیکریٹری وجئے بہادر پاٹھک نے کہا کہ ہائیکورٹ کی ہدایت کا خیرمقدم ہے لیکن یہ بدبختی ہے کہ الیکشن کمیشن سرکاری عہدیداروں کے بارے میں جو سیفائی خاندان اور امیدواروں کے رشتہ داروں سے قربت رکھتے ہیں، کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کررہا ہے۔ یہ افراد اب بھی اہم عہدوں پر ہیں، اور انتخابات کو متاثر کرسکتے ہیں۔ بی جے پی یوپی ڈی جی پی اور سماج وادی پارٹی کے امیدواروں کی تائید کرنے والے دیگر عہدیداروں کی علیحدگی کا عرصہ سے مطالبہ کررہی ہے۔ بی جے پی قائدین کے ایک وفد نے چیف سیکریٹری ، ڈائریکٹر جنرل اور ایڈیشنل ڈائریکٹر جنرل یوپی پولیس کے خلاف الیکشن کمیشن میں درخواست پیش کی تھی، اور مطالبہ کیا تھا کہ ان کا تبادلہ کردیا جائے تاکہ آزادانہ اور منصفانہ انتخابات یقینی بنائے جاسکیں۔ پارٹی نے مطالبہ کیا کہ رامپور، فیض آباد اور میرٹھ کے ضلع مجسٹریٹس کو بھی تبدیل کیا جائے۔ پارٹی نے ان پر جانبدارانہ رویہ اختیار کرنے کا الزام عائد کیا۔ پاٹھک نے کہا کہ نظم و قانون کی شاملی ضلع کے علاقہ کیرانا میں ابتر صورتحال کے بارے میں ہائیکورٹ کی ہدایت کا خیرمقدم کیا جاتا ہے اور آزادانہ اور منصفانہ انتخابات کے انعقاد کے بارے میں اظہار فکر مندی کیا جاتا ہے کیونکہ برسراقتدار پارٹی نے داغ دار عہدیداروں کو جو امیدواروں سے قربت رکھتے ہیں، اہم عہدوں پر فائز کررکھا ہے۔ہائیکورٹ کی ہدایت یو پی حکومت پر بی جے پی پر عائد کردہ الزامات کی توثیق ہے۔

 

ستیارتھی کے نوبل انعام کی
تصویر کا سرقہ
نئی دہلی۔ 7 فروری (سیاست ڈاٹ کام) نوبل انعام یافتہ کیلاش ستیارتھی کی قیام گاہ واقع جنوب مشرقی دہلی کے علاقہ کالکاجی سے نقب زنی کے ذریعہ نوبل انعام کی تصویر کا سرقہ کرلیا گیا۔

TOPPOPULARRECENT