Tuesday , August 22 2017
Home / شہر کی خبریں / آزادی مذہب کی برقراری کیلئے مشترکہ جدوجہد پر زور

آزادی مذہب کی برقراری کیلئے مشترکہ جدوجہد پر زور

آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ کی مہم پر اجلاس ، پروگرام کو قطعیت ، کمیٹیوں کی تشکیل
حیدرآباد۔/4نومبر، ( سیاست نیوز) ملک کے موجودہ حالات میں دیگر مذاہب کے ماننے والے سیکولر افراد کے ساتھ مشترکہ جدوجہد ضروری ہے تاکہ ملک میں آزادی مذہب کی برقراری کو یقینی بنایا جاسکے۔ آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ کی جانب سے جاری ’ دین بچاؤ ۔ دستور بچاؤ ‘ مہم کے سلسلہ میں آج دفتر کُل ہند مجلس تعمیر ملت واقع مدینہ منشن میں ایک اہم اجلاس زیر صدارت  جناب عبدالرحیم قریشی منعقد ہوا۔ اس اجلاس میں ریاست تلنگانہ و آندھرا پردیش میں ’ دین بچاؤ۔ دستور بچاؤ ‘ مہم کے سلسلہ میں مجوزہ پروگرامس کیلئے کمیٹی تشکیل دی گئی اور ضلع واری اساس پر انچارجس کے تقرر کا فیصلہ کیا گیا۔ ہندوستان میں اقلیتوں کے ساتھ جاری ناانصافیوں اور مذہبی مداخلت کے واقعات میں ہورہے تشویشناک اضافہ پر اجلاس میں سخت برہمی کا اظہار کیا گیا اور دستور ہند کی حفاظت کے ساتھ ساتھ تحفظ دین کو بھی ناگزیر قرار دیا گیا۔ قومی سطح پر جاری کل ہند مسلم پرسنل لا بورڈ کی اس مہم میں شدت پیدا کرنے کیلئے منعقدہ اس اجلاس میں اس بات کا فیصلہ کیا گیا ہے کہ ضلع کریم نگر، ورنگل، ظہیرآباد، حیدرآباد، کرنول، گنٹور اور وجئے واڑہ جیسے شہروں میں بڑے پیمانے پر جلسے منعقد کرتے ہوئے عوام میں شعور بیدار کیا جائے گا۔ اجلاس میں گاؤکشی، سوریہ نمسکار اور عدم تحمل کے مسئلہ پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔ مولانا خالد سیف اللہ رحمانی کنوینر ’ دین بچاؤ۔ دستور بچاؤ ‘ و سکریٹری آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ کے علاوہ مولانا سید شاہ قبول پاشاہ شطاری، مولانا رحیم الدین انصاری جوائنٹ کنوینر ’ دین بچاؤ۔ دستور بچاؤ‘ مولانا محمد حسام الدین ثانی ( جعفر پاشاہ ) ، مولانا سید شاہ فضل اللہ قادری الموسوی، مولانا اکرم پاشاہ قادری، مولانا حامد محمد خاں امیر جماعت اسلامی حلقہ تلنگانہ، آندھرا و اڑیسہ، جناب محمد اظہر الدین، مولانا سید احمدالحسینی سعید قادری، جناب محمد جعفر، جناب ناظم فاروقی، جناب اقبال احمد انجینئر، ڈاکٹر اسماء زہرہ، محترمہ عقیلہ خاموشی، محترمہ جلیس النساء، محترمہ صبیحہ صدیقی، محترمہ تہنیت اظہر کے علاوہ دیگر اہم شخصیتیں موجود تھیں۔ اس اجلاس میں ضلع نظام آباد، کریم نگر، محبوب نگر، گنٹور، ورنگل، کرنول، کڑپہ اور وجئے واڑہ سے تعلق رکھنے والے نمائندوں نے بھی شرکت کی۔ قومی سطح پر چلائی جارہی اس مہم کے قومی کنوینر مولانا ولی رحمانی ہیں جن کی نگرانی میں دستور ہند کے تحفظ اور دین میں مداخلت کی کوششوں کے متعلق شعور بیداری کے ساتھ ساتھ عوامی رائے عامہ کو ہموار کیا جارہا ہے۔ جناب محمد عبدالرحیم قریشی صدر کل ہند مجلس تعمیر ملت نے اس موقع پر اپنے صدارتی خطاب کے دوران ملک کے حالات سے واقف کرواتے ہوئے کہا کہ موجودہ صورتحال میں ملک کی اقلیتوں و سیکولر افراد کو ساتھ رکھتے ہوئے جدوجہد ناگزیر ہے۔ اجلاس میں اس بات کا بھی فیصلہ کیا گیا ہے کہ ان مجوزہ جلسوں میں نہ صرف مسلم ذمہ داروں کو مدعو کیا جائے گا بلکہ دیگر سیکولر شخصیتوں اور اقلیتی طبقات کی نمائندہ شخصیتوں کو مدعو کرتے ہوئے اسے عوامی تحریک بنایا جائے گا۔ ان جلسوں میں عیسائی مذہبی رہنماؤں کو بھی مدعو کرنے کے متعلق فیصلہ کیا گیا ہے۔ جئے پور میں منعقدہ آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ کے اجلاس میں کئے گئے ان فیصلوں پر مؤثر عمل آوری کیلئے ریاست آندھرا پردیش و تلنگانہ میں ذیلی کمیٹیوں کی تشکیل کے ذریعہ جلسے منعقد کئے جائیں گے۔

TOPPOPULARRECENT