Wednesday , August 23 2017
Home / ہندوستان / آسام میں دیہاتیوں نے 6 کلو میٹر سڑک از خود تعمیر کرلی

آسام میں دیہاتیوں نے 6 کلو میٹر سڑک از خود تعمیر کرلی

سینکڑوں دیہات آج بھی برقی کنکشن سے محروم۔ سرکاری انتظامیہ کی بے حسی
گوہاٹی۔/22ڈسمبر، ( سیاست ڈاٹ کام ) حکومت سے بارہا نمائندگیوں پر کوئی جواب نہ ملنے پر آسام کے ضلع دیما سہاؤ میں موضع بوروابی کے دیہاتیوں نے 6 کلو میٹر طویل سڑک اپنے ہی بل بوتے پر تعمیر کرلی اور اس طرح اپنے گاؤں کو دنیا سے جوڑنے میں کامیابی حاصل کرلی ۔ کئی سالوں تک سرکاری انتظامیہ کا دروازہ کھٹکھٹانے کے بعد باالآخر دیہاتیوں نے سماجی خدمات کا جذبہ رکھنے والے ایک صنعت کار اچھنگ زیمے سے رجو ع ہوکر مسئلہ کا حل تلاش کیا۔ اگرچیکہ دیہاتیوں نے سینکڑوں مرتبہ حکومت سے رجوع ہوئے لیکن کوئی مثبت جواب نہیں دیا گیا۔ بعد ازاں میرے پاس آکر یہ درخواست کی کہ اگر وہ امداد کریں گے تو اپنی محنت سے سڑک تعمیر کریں گے۔ ابتداء میں یہ حیرت انگیز معلوم ہوا چونکہ میں ان کی مشکلات کا عینی شاہد ہوں لہذا میں نے کچھ نہ کچھ امداد کرنے کا فیصلہ کیا۔ اچھنگ زیمے (Aching Zeme) نے بتایا کہ ابتدائی سروے کے بعد بوروابی کو موضع زیکنگ سے جوڑنے کیلئے سڑک کی تعمیر کا فیصلہ کیا گیا جبکہ اس گاؤں کی سڑک ضامن روزگار اسکیم کے تحت تعمیر کی گئی ہے۔گوکہ یہ سڑک 6 کلو میٹر طویل ہے لیکن دیہاتیوں نے ایک پہاڑتوڑ کر راستہ نکالا ہے ۔ ہماری یہ خواہش تھی کہ سڑک ایسی تعمیر گئی ہے کہ موٹر سیکلیں آسانی سے چلائی جاسکیں۔ اس مقصد کیلئے دیہاتیوں نے سماجی کارکن سے 20ہزار روپئے کی امداد طلب کی۔ لیکن میں نے 60ہزار روپئے کا عطیہ دیا جبکہ سڑک کی تعمیر کا تخمینہ 1.5 لاکھ روپئے تھا لہذا ہم نے دوست احباب سے مزید 40 ہزار کا چندہ اکٹھا کرکے پایہ تکمیل کو پہنچایا۔ بعد ازاں ملک اور بیرونی ممالک سے بھی عطیات روانہ کئے گئے۔ سڑک کی تعمیر 26نومبر کو شروع کی گئی اور گذشتہ ہفتہ مکمل کرلی گئی۔ ضلع دیماسہاؤ کے 30 دیہاتوں میں آج بھی سڑکیں نہیں ہیں۔ سماجی کارکن نے بتایا کہ ہم پھر ایک بار سرکاری حکام سے رجوع ہوکر درخواست پیش کریں گے اگر کوئی جواب نہ ملنے پر مرحلہ وار دیگر دیہاتوں میں سڑکوں کی تعمیر کا بیڑہ اٹھایا جائیگا۔ ستم بالائے ستم ضلع کے 300 دیہاتوں میں برقی کنکشن بھی نہیں ہیں جہاں پر شام ہوتے ہی تاریکی چھاجاتی ہے۔ تاہم ضلع انتظامیہ کے ترجمان نے بتایا کہ وہ مقامی لوگوں کی نمائندگیوں اور مشکلات سے واقف ہیں۔
وزیر اعظم کے خلاف الزامات کی تحقیقات کروانے
لالو یادو کا مطالبہ
پٹنہ۔ 22 دسمبر (سیاست ڈاٹ کام) قومی جنتا دل (آر جے ڈی) کے صدر لالو پرساد یادو نے وزیر اعظم نریندر مودی کے خلاف کانگریس نائب صدر راہول گاندھی کے لگائے گئے الزامات کی جانچ سپریم کورٹ کی نگرانی میں کرانے کا مطالبہ کیا ہے ۔ مسٹر یادو نے آج یہاں اپنی رہائش گاہ پر نامہ نگاروں سے بات چیت کے دوران کہا کہ کانگریس نائب صدر راہول گاندھی نے وزیر اعظم نریندر مودی پر صنعت کاروں سے 40 کروڑ سے بھی زیادہ روپے لینے کا سنگین الزام لگایا ہے ۔ اس پر وزیر اعظم مودی کو صورتحال واضح کرنی چاہئے ۔ انہوں نے کہا کہ اگر مسٹر مودی اس پر خاموش رہتے ہیں تو اس کی جانچ سپریم کورٹ کے کسی جج یا ان کی نگرانی میں کرائی جانی چاہئے ۔ آر جے ڈی سربراہ نے کہا کہ کانگریس نائب صدر راہول گاندھی نے ثبوتوں کے ساتھ وزیر اعظم پر 40 کروڑ روپے کے بدعنوانی کے الزام لگائے ہیں۔ یہ معمولی بات نہیں ہے ۔ وزیر اعظم اپنے اوپر لگائے گئے بدعنوانی کے الزامات پر وضاحت پیش کریں۔ خاموشی اختیار کرنے سے کام نہیں چلے گا۔ انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم خود کو ‘فقیر’ بتاتے ہیں۔ فقیر کچھ چھپاتے نہیں۔ شفاف زندگی جیتے ہیں۔ اس لئے فقیر صاحب 40 کروڑ کا حساب کتاب بتائیں ورنہ فقیر اور فقیری سے دنیا کا اعتماد اٹھ جائے گا۔

TOPPOPULARRECENT