Tuesday , September 26 2017
Home / کھیل کی خبریں / آسٹریلیائی بولر جانسن کی 8 سالہ انٹرنیشنل کریئر سے سبکدوشی

آسٹریلیائی بولر جانسن کی 8 سالہ انٹرنیشنل کریئر سے سبکدوشی

پرتھ ، 17 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) جارحانہ آسٹریلیائی پیس بولر مچل جانسن نے آج اعلان کردیا کہ نیوزی لینڈ کے خلاف جاری دوسرے ٹسٹ کے ختم پر وہ تمام نوعیت کی انٹرنیشنل کرکٹ سے سبکدوش ہورہے ہیں،اس طرح کئی ساتھی ویٹرنس میں شامل ہوگئے جنھوں نے حال میں مسابقتی کرکٹ کو خیرباد کہا ہے۔ وہ سبکدوشی کے معاملے میں مائیکل کلارک، براڈ ہاڈین، ریان ہیرس، کرس روجرز اور شین واٹسن کے ساتھ مل گئے ہیں، جو تمام نے انگلینڈ کے خلاف حالیہ ایشز سیریز کے بعد ریٹائرمنٹ لی۔ جانسن نے دراصل پیر کی شب انٹرنیشنل اور فرسٹ کلاس کرکٹ سے ریٹائرمنٹ کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ پرتھ میں جاری ٹسٹ کے بعد وہ ریٹائر ہورہے ہیں۔  اس میچ سے قبل جانسن نے کہا تھا کہ جب تک وہ اچھی کارکردگی پیش کر رہے ہیں اور ٹیم میں اپنا کردار نبھا رہے ہیں تب تک وہ کھیلتے رہیں گے۔ لیکن اس ٹسٹ میں کین ولیمسن اور راس ٹیلر نے 34 سالہ جانسن کو کسی طرح نہیں بخشا اور پرتھ ٹسٹ میں کسی بھی آسٹریلیائی بولر کی جانب سے انھوں نے سب سے زیادہ رنز دیئے۔ انھوں نے پہلی اننگز میں 157 رنز کے عوض ایک وکٹ لی۔ اس کے بعد انھوں نے کہا: ’’مجھے یوں محسوس ہوتا ہے کہ الوداع کہنے کا بہترین وقت آ گیا ہے۔ میں خوش قسمت رہا کہ مجھے ایک شاندار کریئر ملا اور میں نے اپنے ملک کیلئے کھیلنے کے ہر لمحے کا بھرپور لطف اٹھایا۔

یہ زبردست سفر رہا، لیکن اس سفر کو کسی نہ کسی مقام پر ختم ہونا تھا اور واکا گراؤنڈ میں اس کا اختتام خصوصی حیثیت کا حامل ہے۔ میں نے اس فیصلے پر بہت غور کیا۔ اس میچ کے بعد میں بہت یقین کے ساتھ نہیں کہہ سکتا کہ میں اس سطح پر سبز بیگی (آسٹریلیا کی کیاپ) کیلئے مسلسل اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کرتا رہوں گا۔‘‘ جانسن نے 73 ٹسٹ میں آسٹریلیا کی نمائندگی کی اور313 وکٹیں لئے۔ وہ آسٹریلیا کی طرف سے صرف ڈینس للی (355)، گلن مک گرا (563) اور شین وارن (708) سے پیچھے اور پیشرو بریٹ لی (310) سے ذرا آگے ہیں۔ 2001ء میں کوئنس لینڈ کی طرف سے اپنا فرسٹ کلاس کریئر شروع کرنے کے بعد جانسن نے اپنا پہلا ٹسٹ 2007ء میں سری لنکا کے خلاف برسبین میں کھیلا تھا۔ وہ بعد میں ویسٹرن آسٹریلیا منتقل ہوگئے اور اس طرح اپنے منتخبہ ہوم گراؤنڈ پر کھیلتے ہوئے اپنا صرف آٹھ سالہ انٹرنیشنل کریئر ختم کردیا۔ انھوں نے 14-2013ء میں آسٹریلیا کی ایشز میں 5-0 سے کامیابی میں 37 وکٹیں بہ اوسط 13.97 رنز لے کر کلیدی کردار ادا کیا تھا۔ انھوں نے اپنے کریئر میں ایک اننگز میں 12 مرتبہ پانچ یا اس سے زیادہ وکٹیں لئے جبکہ تین بار ٹسٹ میں 10 یا اس سے زیادہ وکٹیں حاصل کئے۔ ان کی بہترین بولنگ 8/61 جنوبی افریقہ کے خلاف یہیں واکا گراؤنڈ پر 2008ء میں درج ہوئی تھی جبکہ اُس میچ میں انھوں نے 127 رنز کے عوض 12 وکٹیں لئے تھے۔ بیٹنگ میں انھوں نے ٹسٹ میں 2000 سے زیادہ رنز بنائے جن میں ایک سنچری اور 11 نصف سنچریاں شامل ہیں جبکہ سابق آئی سی سی کرکٹر آف دی ایئر نے ونڈے انٹرنیشنل کرکٹ کے 153 میچوں میں 239 وکٹیں بھی لئے اور 6/31 بہترین بولنگ رہی۔علاوہ ازیں جانسن نے 30 ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنلس بھی کھیلے ہیں۔ کرکٹ آسٹریلیا چیرمین ڈیوڈ پیور نے کہا، ’’مجھے یقین ہے دنیا بھر میں کئی بیٹسمین اس وقت یہ جان کر راحت کی سانس لے رہے ہیںکہ انھیں اب مزید اُن (جانسن) کا سامنا کرنا نہیں ہے۔ وہ ہمارے تمام وقتوں کے عظیم بولروں میں سے ایک کی حیثیت سے اس کھیل سے وداعی لے رہے ہیں‘‘۔ دریں اثناء نئی دہلی سے نیوز ایجنسی ’پی ٹی آئی‘ کے بموجب ہندوستان کے لجنڈ سچن تنڈولکر نے مچل جانسن کی تعریف کرتے ہوئے انھیں جارحانہ بولر قرار دیا اور کہا کہ وہ ہمیشہ ہی آسٹریلیا کیلئے ’ اسپیشل بولر‘رہے۔ تنڈولکر اور جانسن انڈین پریمیر لیگ (آئی پی ایل) 2012-13ء کے دوران ممبئی انڈینس کیلئے ٹیم ساتھی رہے تھے۔

TOPPOPULARRECENT