Friday , August 18 2017
Home / شہر کی خبریں / آندھرا پردیش ریاست کیلئے مرکز سے 1976 کروڑ کی اجرائی

آندھرا پردیش ریاست کیلئے مرکز سے 1976 کروڑ کی اجرائی

چیف منسٹر چندرا بابو کی وزیر اعظم نریندر مودی سے نمائندگی پر مثبت ردعمل
حیدرآباد ۔ 18 ۔ اگست : ( سیاست نیوز) : ریاست آندھرا پردیش کے مالی خسارہ کی پابجائی و ہمہ جہتی ترقی کے لیے مرکزی حکومت نے گذشتہ دنوں چیف منسٹر مسٹر این چندرا بابو نائیڈو کی وزیر اعظم نریندر مودی سے کی گئی موثر نمائندگی کی روشنی میں جملہ 1976 کروڑ روپئے جاری کرتے ہوئے احکامات جاری کیے ۔ حکومت آندھرا پردیش کے باوثوق ذرائع کے مطابق بتایا جاتا ہے کہ ریاست آندھرا پردیش میں پچھڑے ہوئے پسماندہ علاقوں کی ترقی کو یقینی بنانے کے لیے 350 کروڑ روپئے ، مالی خسارہ کی پابجائی کے لیے 1176 کروڑ روپئے مجوزہ تعمیر کی جانے والی نئی راجدھانی کے کاموں کی انجام دہی کے لیے 450 کروڑ روپئے جاری کئے گئے ۔ اسی دوران رکن پارلیمان تلگو دیشم پارٹی و مرکزی وزیر مسٹر سوجنا چودھری نے مرکزی حکومت کی جانب سے ریاست آندھرا پردیش کی ہمہ جہتی ترقی و مالی خسارہ کی پابجائی کے لیے جملہ 1976 کروڑ روپئے جاری کرتے ہوئے احکامات جاری کرنے کی توثیق کی ۔ مسٹر چودھری نے دہلی میں اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ریاست آندھرا پردیش کے مالی موقف میں بہتری پیدا کرنے مالی خسارہ کو دور کرنے کے لیے گذشتہ دنوں چیف منسٹر آندھرا پردیش مسٹر این چندرا بابو نائیڈو نے وزیر اعظم مسٹر نریندر مودی اور دیگر دستیاب مرکزی وزراء سے ملاقات کر کے ریاست آندھرا پردیش کے مالی موقف سے واقف کروایا تھا ۔ اور وزیر اعظم مسٹر نریندر مودی سے ریاست آندھرا پردیش کے مالی موقف میں بہتری پیدا کرنے کے لیے زیادہ سے زیادہ فنڈز فراہم کرنے کا پر زور مطالبہ کیا تھا ۔ اس موقعہ پر اخباری نمائندوں کے پوچھے گئے اس سوال پر کہ ریاست آندھرا پردیش کو خصوصی موقف کب تک حاصل ہوگا ۔ جواب دیتے ہوئے مسٹر سوجنا چودھری نے اس توقع کا اظہار کیا کہ جاریہ ماہ کے اواخر تک آندھرا پردیش ریاست کو خصوصی موقف کا باقاعدہ طور پر اعلان کیا جائے گا ۔ انہوں نے مزید کہا کہ بعض فنی مسائل کی وجہ سے مرکزی وزراء الجھن سے دوچار ہورہے ہیں ۔ تاہم ریاست آندھرا پردیش کے لیے سب سے پہلے رقومات جاری کرنے کے وزیر اعظم کی جانب سے دئیے گئے احکامات کی روشنی میں ہی فنڈز جاری کیے گئے ۔۔

TOPPOPULARRECENT