Wednesday , August 16 2017
Home / شہر کی خبریں / آندھرا پردیش میں بھی وفاداریاں تبدیل ہونے کا خدشہ

آندھرا پردیش میں بھی وفاداریاں تبدیل ہونے کا خدشہ

تلنگانہ کے حالات کی تقلید ، وائی ایس آر کانگریس کے ارکان اسمبلی تلگو دیشم میں شامل ہونے کوشاں
حیدرآباد ۔ 22 ۔ فروری : ( سیاست نیوز) : آندھرا پردیش میں بھی وائی ایس آر کانگریس پارٹی کے کئی ارکان اسمبلی اپنی سیاسی وفاداریاں تبدیل کرنے اور تلگو دیشم میں شامل ہونے کے لیے تیار ہیں ۔ بھوماناگی ریڈی نے آج پی اے سی کے عہدے سے استعفیٰ دیا اور اپنے مستقبل کے بارے میں بہت جلد فیصلہ کرنے کا اعلان کیا ہے ۔ تلنگانہ میں تلگو دیشم کے 10 ارکان اسمبلی حکمران ٹی آر ایس میں شامل ہوچکے ہیں ۔ آندھرا پردیش میں وائی ایس آر کانگریس پارٹی کے کئی ارکان اسمبلی حکمران تلگو دیشم سے رابطے میں ہیں باوثوق ذرائع سے پتہ چلا ہے کہ بھوماناگی ریڈی اپنی دختر اور اپنے ایک یا دو حامی ارکان اسمبلی کے ساتھ تلگو دیشم میں شامل ہونے والے ہیں تین دن قبل ہی وہ اس کا فیصلہ کرچکے تھے تاہم قائد اپوزیشن و صدر وائی ایس آر کانگریس پارٹی مسٹر جگن موہن ریڈی اور ان کی والدہ سے ٹیلی فون پر بات چیت کرنے کے بعد انہوں نے خاموشی اختیار کرلی تھی ۔ تاہم انہوں نے آج پبلک اکاونٹس کمیٹی کا اجلاس طلب کیا اور ارکان کو اپنے فیصلے سے واقف کراتے ہوئے استعفیٰ اسپیکر اسمبلی آندھرا پردیش کو روانہ کردیا ۔ انہوں نے بعد ازاں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ وہ جو کچھ بھی فیصلہ کریں گے اس سے متعلق میڈیا کو ضرور بتائیں گے ۔ ان کا فیصلہ چند گھنٹوں میں یا چند دنوں میں ہوسکتا ہے ۔ باوثوق ذرائع سے پتہ چلا ہے کہ وہ تلگودیشم میں شامل ہونے کا اپنا من بنا چکے ہیں اور اس سلسلے میں ان کی چیف منسٹر آندھرا پردیش چندرا بابو نائیڈو سے بات چیت ہوچکی ہے ۔ ضلع کرنول کی نمائندگی کرنے والے ڈپٹی چیف منسٹر مسٹر کے ای کرشنا مورتی اور تلگو دیشم کے ارکان اسمبلی شلپا موہن ریڈی اور دوسرے ارکان اسمبلی بھوماناگی ریڈی کی تلگو دیشم میں شمولیت کے خلاف ہیں ۔ چندرا بابو نائیڈو تمام ناراض قائدین کو طلب کر کے انہیں منانے کی کوشش کررہے ہیں ۔ چیف منسٹر آندھرا پردیش کے فرزند مسٹر نارا لوکیش وائی ایس آر کانگریس پارٹی کے ارکان اسمبلی سے رابطے میں ہیں اور ان سے مشاورت کررہے ہیں ۔۔

TOPPOPULARRECENT