Saturday , October 21 2017
Home / شہر کی خبریں / آندھرا پردیش میں کئی مرکزی اداروں کا قیام

آندھرا پردیش میں کئی مرکزی اداروں کا قیام

حیدرآباد۔ 20 اگست (سیاست نیوز) مرکزی وزیر فروغ انسانی وسائل سمرتی ایرانی نے آج کہا کہ آندھرا پردیش میں کئی مرکزی اداروں بشمول آئی آئی ٹی اور آئی آئی ایم کے قیام کے لئے حکومت 3,030 کروڑ روپئے سے زائد سرمایہ مشغول کرنے کی تجویز رکھتی ہے۔ ان اداروں میں آئی آئی ٹی بمقام تروپتی، آئی آئی ایم بمقام وشاکھاپٹنم، این آئی ٹی بمقام تاڑے پلی گوڑم ضلع مغربی گوداوری اور انڈین انسٹیٹیوٹ آف سائنس ایجوکیشن اینڈ ریسرچ شامل ہیں۔ سمرتی ایرانی نے کہا کہ آئی آئی ٹی تروپتی، انڈین انسٹیٹیوٹ آف سائنس ایجوکیشن اینڈ ریسرچ اور این آئی ٹی تاڑے پلی گوڑم میں کلاسیس شروع ہوچکی ہیں۔ آئندہ ماہ آئی آئی ایم وشاکھاپٹنم میں بھی کلاسیس کا آغاز ہوجائے گا۔ وہ آج حیدرآباد سے 320 کیلومیٹر دور تاڑے پلی گوڑم میں این آئی ٹی کیلئے سنگ بنیاد رکھنے کے بعد خطاب کررہی تھیں۔ اس تقریب میں مرکزی وزیر ایم وینکیا نائیڈو اور چیف منسٹر آندھرا پردیش مسٹر این چندرا بابو نائیڈو بھی موجود تھے۔ سمرتی ایرانی نے کہا کہ مرکز آئی آئی ٹی تروپتی میں 700 کروڑ روپئے، این آئی ٹی میں 300 کروڑ روپئے ، آئی آئی ایم وشاکھاپٹنم میں 680 کروڑ روپئے اور تروپتی کے قریب انسٹیٹیوٹ آف سائنس اینڈ ریسرچ میں 870 کروڑ روپئے کے علاوہ دیگر اعلیٰ تعلیم کے اداروں میں 480 کروڑ روپئے سے زائد سرمایہ مشغول کرنے کی تجویز رکھتی ہے۔ یہ ادارے آندھرا پردیش میں گزشتہ سال ریاست کی تقسیم کے موقع پر مرکز کی جانب سے کئے گئے وعدے کے مطابق قائم کئے جارہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اگر اس رقم کو یکجا کیا جائے گا تو حکومت ہند صرف اعلیٰ تعلیم کے شعبہ میں آندھرا پردیش کی ترقی کیلئے 3,030 کروڑ روپئے صرف کررہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ چیف منسٹر چندرا بابو نائیڈو کا خواب ہے کہ آندھرا پردیش کو دنیا بھر میں تعلیمی مرکز کے طور پر تیار کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ مرکزی حکومت اس مقصد کے حصول میں ممکنہ مدد کررہی ہے۔

TOPPOPULARRECENT