Wednesday , October 18 2017
Home / شہر کی خبریں / آندھرا پردیش و تلنگانہ میں موثر غذائی اشیاء کی عدم فراہمی

آندھرا پردیش و تلنگانہ میں موثر غذائی اشیاء کی عدم فراہمی

مختلف امراض میں اضافہ ، رپورٹ کارڈ کی اجرائی ، چھایہ رتن و کودنڈا رام کا خطاب
حیدرآباد۔27اگست(سیاست نیوز) تلنگانہ اور آندھرا ریاستوں میں دلت اور دیگر درج فہرست طبقات کو فراہم کردہ غذا پرمشتمل ریسرچ کے رپورٹ کا آج سندریاوگنان کیندرم ‘ باغ لنگم پلی میں ریٹائرڈ آئی اے ایس آفیسر شریمتی چھایہ رتن کے ہاتھو ں رسم اجرائی عمل میںائی۔بعدازاں دلت اور قبائیلوں کے علاوہ دیگر درج فہرست طبقات پر مشتمل مذکورہ رپورٹ کارڈ پر ریاستی سطح کے مباحثہ منعقد ہوا ۔ جس پر پروفیسر کودنڈارام چیرمن ٹی جے اے سی کے علاوہ سماجی جہدکار جیون کمار‘ مسٹر اشوک بھارتی‘ بی وینکٹ راجو نے اپنے خیالات کا اظہا ر کرتے ہوئے درج فہرست طبقات کو موثر غذا ئی اشیاء فراہم کرنے میں دونوں ریاستوں کے حکمران کو ذمہ دار ٹھرایا۔ شریمتی چھایہ رتن نے رپورٹ کارڈ کی رسم اجرائی کے بعد مباحثہ میں حصہ لیتے ہوئے کہاکہ تلنگانہ اور آندھرا میں درج فہرست پسماندہ طبقات کی اکثریت ہے جوموثر غذائی اشیاء کی عدم فراہمی کے سبب مختلف امراض کا شکار ہیں۔ انہوں نے مزیدکہاکہ درج فہرست طبقات میں نومولود بچوں کے اندر جسمانی او ردماغی نشونماء میں بڑی حدتک کمی دیکھنے کو ملتی ہے جس کاسبب انہیں موثر غذا کی عدم فراہمی ہے۔شریمتی چھایہ رتن نے کہاکہ طبقہ واری اساس پر انصاف کو یقینی بنانے کے لئے ڈاکٹر بھیم رائو امبیڈکر کے نظریات پر عمل آوری میںجہاں پر سیاسی جماعتیں ناکام ہیں وہیںاپنی ناکامیوں پر جوابدہی سے بھی مذکورہ سیاسی جماعتیں قاصر ہیں۔ پروفیسر کودنڈارام نے بھی دلت اور دیگر پسماندہ طبقات کے اندر جسمانی نشوونماء کی کمی میں غیرمحفوظ غذا کو ذمہ دار ٹھرایا۔انہوں نے کہاکہ فوڈ سکیورٹی قوانین کے تحت میڈ ڈے میلزاور دیگر کھانے کی اسکیمات میں درج فہرست طبقات کا خاص خیال رکھنے کی ضرورت ہے جو برسوں سے موثر غذاسے محروم ہیں۔ سماجی جہدکار جیون کمار نے اس موقع پر درج فہرست طبقات کی موثر غذاسے محرومی کاکارپوریٹ اداروں کی بڑھتی اجارہ داری کو ذمہ دار ٹھرایا۔ انہوں نے گائو کشی کے نام پر دوسرے بڑے جانوروں کے گوشت کی فروخت پر امتناع عائد کرنے کی سازشوں کو بھی غریب طبقات کو موثر غذاسے محروم رکھنے کا ذمہ دار ٹھرایا۔

TOPPOPULARRECENT