Monday , August 21 2017
Home / شہر کی خبریں / آندھرا پردیش کے ائمہ و موذنین کو اعزازیہ

آندھرا پردیش کے ائمہ و موذنین کو اعزازیہ

امام کو پانچ ہزار ، موذن کو تین ہزار دینے کا اعلان ، درخواستوں کی طلبی
حیدرآباد ۔ 11 ۔ جنوری (سیاست نیوز) آندھراپردیش حکومت نے ائمہ اور مؤذنین کیلئے علی الترتیب ماہانہ 5000 اور 3000 روپئے اعزازیہ فراہم کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ اس سلسلہ میں 2500 مساجد کی نشاندہی کرتے ہوئے حکومت نے دو کروڑ روپئے مختص کئے ہیں۔ کمشنر اقلیتی بہبود آندھراپردیش شیخ محمد اقبال آئی پی ایس نے بتایا کہ حکومت نے کم آمدنی والی مساجد کے ائمہ اور موذنین کی مالی امداد کیلئے اس اسکیم کا آغاز کیا ہے ۔ تلنگانہ حکومت نے اس اسکیم کے تحت ائمہ اور مؤذنین کو ماہانہ 1000 روپئے ادا کرنے کا فیصلہ کیا ۔ آندھراپردیش حکومت کا ماننا ہے کہ ماہانہ 1000 روپئے ائمہ اور مؤذنین کے معیار زندگی بہتر بنانے میں ناکافی ہے۔ شیخ محمد اقبال نے بتایا کہ آندھراپردیش میں کم آمدنی والی مساجد کے ائمہ اور مؤذنین راست طور پر درخواست داخل کرسکتے ہیں۔ انہیں آن لائین درخواست داخل کرنے کی ضرورت نہیں ہے۔ وقف بورڈ کی جانب سے ایسی مساجد کی نشاندہی کی جائے گی جس کی آمدنی کم ہو اور جہاں کے ائمہ اور مؤذنین کی تنخواہیں ناکافی ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ ہر امام کو ماہانہ 5000 روپئے اور مؤذن 3000 روپئے راست طور پر ا کا ؤنٹ میں جمع کئے جائیں گے ۔ جاریہ سال سے اسکیم پر عمل آوری کا آغاز ہوگا، اقلیتی بہبود کے عہدیدار اسکیم کے قواعد کو قطعیت دے رہے ہیں۔ آندھراپردیش حکومت بہت جلد حج کمیٹی تشکیل دینے کی تیاری کر رہی ہے۔ اس کے علاوہ اردو اکیڈیمی اور دیگر اقلیتی اداروں پر تقررات کئے جائیں گے۔ شیخ محمد اقبال کے مطابق حج 2016 ء کیلئے آندھراپردیش کے عازمین حج حیدرآباد سے ہی روانہ ہوں گے کیونکہ آندھراپردیش میں انٹرنیشنل ایرپورٹ کی تعمیر مکمل نہیں ہوئی ہے ۔ کڑپہ ضلع میں حج ہاؤز تعمیر کیا جائے گا جس کا سنگ بنیاد چیف منسٹر این چندرا بابو نائیڈو نے رکھا ہے ۔ جبکہ کرنول جہاں اقلیتوں اور اردو بولنے والوں کی قابل لحاظ آبادی موجود ہے، وہاں اردو یونیورسٹی قائم کی جارہی ہے جسے ڈاکٹر عبدالحق کے نام سے موسوم کیا گیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT