Saturday , October 21 2017
Home / ہندوستان / آٹھویں جماعت تک طلبا کو ناکام نہیں کیا جائیگا

آٹھویں جماعت تک طلبا کو ناکام نہیں کیا جائیگا

حق تعلیم قانون میں ترمیم کو راجستھان اسمبلی کی منظوری
جئے پور ۔17ستمبر ( سیاست ڈاٹ کام ) ملک میں پہلی مرتبہ راجستھان اسمبلی میں حق تعلیم قانون 2009ء میں ترمیم کو منظوری دی گئی ہے تاکہ معیار تعلیم میں بہتری لائی جائے اور ایک ایسی گنجائش فراہم کی گئی ہے کہ آٹھویں جماعت تک طالب علم کو ناکام قرار نہ دیا جائے ۔ اس کے برعکس طالب علم کی کارکردگی کو پیش نظر رکھا جائے ۔ ایوان میں آج اپوزیشن کانگریس کی ہنگامہ آرائی کے دوران چار بلس منظور کئے گئے ۔ وزیر ابتدائی و ثانوی تعلیم واسودیو دیونانی نے بل کی منظوری سے قبل کہا کہ راجستھان ملک میں پہلی ریاست ہے جو اس طرح کی ترمیم پیش کررہی ہے اور اس سے معیار تعلیم میں بہتری آئے گی ۔ انہوں نے کہا کہ آٹھویں جماعت تک طالب علم کی کارکردگی کو پیش نظر رکھا جائے گا اور اس ترمیم کا مقصد طلبہ کی تعلیمی بنیاد کو بہتر بنانا ہے ۔ آج ایوان کی جیسے ہی کارروائی شروع ہوئی قائد اپوزیشن رامیشور ڈوڈی اور دیگر کانگریس ارکان نے مختلف مسائل اٹھائے اور ہنگامہ آرائی کرتے ہوئے ایوان کے وسط میں پہنچ گئے ۔ وزیر پارلیمانی اُمور راجندر راتھوڑ نے اپوزیشن کے مطالبات پر اعتراض کیا اور کہا کہ انہیں ایوان کی کارروائی شیڈول کے مطابق چلانے کا موقع دینا چاہیئے ۔

TOPPOPULARRECENT