Thursday , August 17 2017
Home / شہر کی خبریں / ’’آپریشن آکرشن‘‘: ٹی آر ایس میں 2 ارکان اسمبلی کی شمولیت

’’آپریشن آکرشن‘‘: ٹی آر ایس میں 2 ارکان اسمبلی کی شمولیت

گریٹر حیدرآباد اور کونسل کے انتخابات سے قبل کانگریس اور تلگو دیشم کو زبردست دھکہ
حیدرآباد۔/3ڈسمبر، ( سیاست نیوز) گریٹر حیدرآباد اور مجالس مقامی کے قانون ساز کونسل کی نشستوں کے انتخابات سے عین قبل آج تلگودیشم اور کانگریس کو اس وقت دھکہ لگا جب اس کے دو عوامی نمائندوں نے ٹی آر ایس میں شمولیت اختیار کرلی۔ ورنگل لوک سبھا حلقہ کے ضمنی چناؤ میں بدترین شکست کے بعد تلگودیشم اور کانگریس کا کیڈر مایوسی کا شکار ہے ۔ اسی دوران چیف منسٹر چندر شیکھر راؤ کی جانب سے شروع کردہ ’ آپریشن آکرشن ‘ سے متاثر ہوکر ان جماعتوں کے قائدین کی شمولیت کا آغاز ہوچکا ہے۔ حلقہ اسمبلی سکندرآباد کنٹونمنٹ کے تلگودیشم رکن اسمبلی جی سائینا اور حیدرآباد سے تعلق رکھنے والے کانگریس کے رکن قانون ساز کونسل ایم ایس پربھاکر نے آج کیمپ آفس میں چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ سے ملاقات کی اور ٹی آر ایس میں شمولیت کا اعلان کیا۔ چیف منسٹر نے ان عوامی نمائندوں کا پارٹی میں استقبال کرتے ہوئے امید ظاہر کی کہ گریٹر حیدرآباد کے حدود میں ترقیاتی اقدامات پر عمل آوری میں اس سے کافی مدد ملے گی۔ چیف منسٹر کو یقین ہے کہ ان قائدین کی شمولیت سے گریٹر حیدرآباد کے نتائج پر اثر پڑے گا اور ٹی آر ایس کی کامیابی کے امکانات میں اضافہ ہوگا۔ دونوں عوامی نمائندوں کی اچانک شمولیت سے ان کی پارٹیوں میں حیرت اور مایوسی کے ملے جلے جذبات دیکھے گئے جبکہ ٹی آر ایس حلقوں میں کافی جوش و خروش دیکھا گیا۔ وزیر برقی جگدیش ریڈی اور دیگر قائدین شمولیت کے موقع پر موجود تھے۔ دونوں عوامی نمائندوں نے علحدہ علحدہ طور پر چیف منسٹر سے ملاقات کی۔ چیف منسٹر کے قریبی ذرائع نے بتایا کہ شہر سے تعلق رکھنے والے تلگودیشم اور کانگریس کے دیگر اہم قائدین بھی ربط میں ہیں اور وہ کسی بھی وقت شمولیت اختیار کرسکتے ہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ تلگودیشم اور کانگریس کے مزید دو ارکان لیجسلیچر نے ٹی آر ایس میں شمولیت کا من بنالیا ہے اور وہ گزشتہ ایک عرصہ سے خاموشی سے ٹی آر ایس کیلئے کام کررہے ہیں۔ پارٹی میں شمولیت کے بعد میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے جی سائینا نے کہا کہ شہر کی ترقی کیلئے چیف منسٹر کے اقدامات سے متاثر ہوکر انہوں نے تلگودیشم سے علحدگی کا فیصلہ کیا۔ انہوں نے بتایا کہ وہ چیف منسٹر کی کارکردگی اور عوامی بھلائی کے اقدامات سے کافی متاثر ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حیدرآباد کو عالمی معیار کا شہر بنانے کیلئے چیف منسٹر اقدامات کررہے ہیں  ۔       ( باقی سلسلہ صفحہ 8 پر )

TOPPOPULARRECENT