Thursday , August 17 2017
Home / شہر کی خبریں / آپ کی حکومت کا ایڈوکیٹ جنرل بھی تحفظات کا مخالف

آپ کی حکومت کا ایڈوکیٹ جنرل بھی تحفظات کا مخالف

ٹی آر ایس سے مسلمانوں کو دھوکہ، وزیر آئی ٹی کے ٹی آر ناتجربہ کار، محمد علی شبیر قائد اپوزیشن کونسل کا ریمارک

حیدرآباد ۔ 6 ۔ اپریل : ( سیاست نیوز ) : قائد اپوزیشن تلنگانہ قانون ساز کونسل مسٹر محمد علی شبیر نے ریاستی وزیر آئی ٹی کے ٹی آر کو سیاسی طور پر نا تجربہ کار قرار دیتے ہوئے مسلمانوں کو دھوکہ دینے کا ٹی آر ایس حکومت پر الزام عائد کیا ۔ ہائی کورٹ کی ہدایت پر 5 کے بجائے 4 فیصد مسلم تحفظات فراہم کرنے کا دعویٰ کرتے ہوئے ہائی کورٹ کے 3 اور سپریم کورٹ کے ایک فیصلے جملہ 4 فیصد کے دستاویزات کے ٹی آر کو روانہ کرنے کا اعلان کیا ۔ ٹی آر ایس کے دور حکومت میں 12 فیصد مسلم تحفظات پر عمل اوری کو نا ممکن قرار دیا ۔ آج گاندھی بھون میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے یہ بات بتائی ۔

اس موقع پر صدر گریٹر حیدرآباد سٹی کانگریس اقلیت ڈپارٹمنٹ مسٹر شیخ عبداللہ سہیل بھی موجود تھے ۔ مسٹر محمد علی شبیر نے کہا کہ ہائی کورٹ سے سپریم کورٹ تک کانگریس کے دورحکومت میں مسلمانوں کو دئیے جانے والے تحفظات کی مخالفت کرنے والے وکیل کو چیف منسٹر تلنگانہ نے ایڈوکیٹ جنرل منتخب کیا ہے ۔ جس سے 12 فیصد مسلم تحفظات کے معاملے میں حکومت کتنی سنجیدہ ہے اس کا علم ہوگیا ہے ۔ گذشتہ ماہ سپریم کورٹ میں 4 فیصد مسلم تحفظات کی سماعت کا آغاز ہوگیا ہے ۔ بڑے ہی افسوس کے ساتھ کہنا پڑتا ہے کہ تلنگانہ حکومت نے پیروی کے لیے سپریم کورٹ کو وکیل روانہ نہیں کیا ہے جب کہ کانگریس کی طرف سے مشہور قانون داں سلمان خورشید اور آندھرا پردیش حکومت کی طرف سے بھی وکیل رجوع ہوا ہے ۔ 4 فیصد مسلم تحفظات کو بچانے میں دلچسپی رکھنے والی ٹی آر ایس حکومت سے 12 فیصد مسلم تحفظات ملنے کی کوئی امید نہیں ہے ۔ کوئی قانونی اختیارات نہ رکھنے والی سدھیر کمیشن تشکیل دیتے ہوئے وقت ضائع کرنے کے لیے اس کی میعاد میں ابھی تک دو مرتبہ توسیع دی گئی ہے ۔ کے ٹی آر کا جب سیاسی میدان سے کوئی تعلق نہیں تھا تب کانگریس نے 1994 میں جی او ایم ایس نمبر 30 جاری کرتے ہوئے مسلمانوں کو تحفظات فراہم کرنے کا جائزہ لینے کے لیے پٹو سوامی کمیشن تشکیل دی تھی ۔ بعد ازاں کانگریس کی شکست کے بعد 10 سال تک ریاست پر حکمرانی کرنے والی تلگو دیشم حکومت نے پٹو سوامی کمیشن کی میعاد میں 6 مرتبہ توسیع کی۔ کانگریس نے 2004 کے انتخابی منشور میں مسلمانوں کو 5فیصد تحفظات فراہم کرنے کا وعدہ کیا ۔(سلسلہ صفحہ 8 پر )

TOPPOPULARRECENT