Monday , September 25 2017
Home / شہر کی خبریں / ائمہ و موذنین کیلئے اعزازیہ ‘ درخواستوں کی طلبی میں مایوسی

ائمہ و موذنین کیلئے اعزازیہ ‘ درخواستوں کی طلبی میں مایوسی

صرف 8934 درخواستوں کا ادخال ۔ شرائط میں نرمی کے باوجود رد عمل حوصلہ افزا نہیں
حیدرآباد۔/13فبروری، ( سیاست نیوز) تلنگانہ میں ائمہ اور مؤذنین کیلئے حکومت کی جانب سے ماہانہ اعزازیہ کی ادائیگی کیلئے درخواستوں کی طلبی میں وقف بورڈ کو مایوسی ہوئی ہے۔ حکومت نے 5000 ائمہ اور 5000 مؤذنین کو ماہانہ1000/- روپئے اعزازیہ ادا کرنے کا اعلان کیا تھا اور اس کے لئے آن لائن درخواستیں طلب کی گئیں۔ درخواستوں کی سُست رفتار کو دیکھتے ہوئے تاریخ میں توسیع بھی کی گئی لیکن مجموعی طور پر 8934 درخواستیں موصول ہوئی ہیں جو مقررہ نشانہ سے کم ہیں۔ اگر ان درخواستوں کی جانچ کی گئی تو شاید یہ تعداد اور بھی گھٹ جائے گی۔ حکومت نے زیادہ سے زیادہ ائمہ اور مؤذنین کو اس سہولت سے استفادہ کیلئے شرائط میں نرمی کی، پھر بھی ائمہ اور مؤذنین حکومت کی امداد حاصل کرنے کیلئے تیار دکھائی نہیں دیتے۔ واضح رہے کہ مسلم پرسنل لا بورڈ اور دیگر مسلم اداروں نے سرکاری امداد حاصل کرنے کی مخالفت کی ہے جس کے نتیجہ میں وقف بورڈ کو کم درخواستیں وصول ہوئیں۔ اسی دوران چیف ایکزیکیٹو آفیسر وقف بورڈ محمد اسد اللہ نے بتایا کہ 10 اضلاع میں جملہ 8934 درخواستیں داخل کی گئیں جن میں ائمہ کی 4901 اور مؤذنین کی 4033 درخواستیں شامل ہیں۔ انہوں نے کہا کہ درخواستوں کے ادخال کیلئے مسجد کمیٹی کے تصدیقی لیٹر کی شرط کو ختم کردیا گیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ درخواستوں کی جانچ کیلئے جامعہ نظامیہ کے علماء اور شیعہ علماء کے نمائندوں پر مشتمل کمیٹی تشکیل دی جائے گی۔ اس کمیٹی میں ڈپٹی ڈائرکٹر اقلیتی بہبود اور چیف ایکزیکیٹو آفیسر وقف بورڈ بھی شامل ہوں گے۔ بہت جلد یہ کمیٹی درخواستوں کی جانچ کرتے ہوئے اہل امیدواروں کا انتخاب کرے گی۔ حکومت نے اس اسکیم کیلئے 12کروڑ روپئے مختص کئے ہیں۔ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ رمضان المبارک کے موقع پر اس اسکیم کے آغاز کے حق میں تھے لیکن یہ مختلف وجوہات کے سبب ممکن نہ ہوسکا۔ حیدرآباد سے ائمہ اور مؤذنین کی جملہ 1498 درخواستیں داخل کی گئیں جبکہ عادل آباد 611، کریم نگر 973، کھمم 463، محبوب نگر 1132، میدک 1014، نلگنڈہ 829، نظام آباد 1142، رنگاریڈی 445اور ورنگل سے 827 درخواستیں داخل کی گئی ہیں۔

TOPPOPULARRECENT