Monday , August 21 2017
Home / سیاسیات / اترپردیش اسمبلی اور کونسل کی کارروائی دوسرے دن بھی مفلوج

اترپردیش اسمبلی اور کونسل کی کارروائی دوسرے دن بھی مفلوج

پولیس لاٹھی چارج کے خلاف کانگریس ارکان کا احتجاج

لکھنؤ ۔ 18 اگست (سیاست ڈاٹ کام) اترپردیش اسمبلی اور قانون ساز کونسل کے اجلاس میں آج بھی کانگریسی ارکان نے پارٹی کارکنوں پر پولیس لاٹھی چارج کی عدالتی تحقیقات کے مطالبہ پر ہنگامہ برپا کردیا جس کے نتیجہ میں ایوان کی کارروائی کو ایک زائد مرتبہ ملتوی کردینا پڑا۔ آج مسلسل دوسرا دن تھا کہ اسمبلی اور کونسل کی کارروائی تعطل کا شکار ہوگئی جبکہ بی جے پی نے کل ریاست میں امن و قانون کی صورتحال پر مباحث کے مطالبہ پر کارروائی کو روک دیا تھا۔ اجلاس کی کارروائی آج صبح شروع ہوتے ہی کانگریس ارکان ہاتھوں پر سیاہ پٹیاں باندھ کر پلے کارڈس تھامے ہوئے جس پر ’’پولیس کے دم پر یہ سرکار نہیں چلے گی‘‘ کا نعرہ تحریر تھا۔ ایوان کے وسط میں پہنچ گئے اور پارٹی کارکنوں پر کل کے پولیس لاٹھی چارج واقعہ کی عدالتی تحقیقات کا مطالبہ کیا۔ سی ایل پی لیڈر پردیپ ماتھر نے کہا کہ لاٹھی چارج میں سینکڑوں کانگرسیی کارکنان بشمول ریاستی پارٹی صدر زخمی ہوگئے

اور یہ مطالبہ کیا کہ اس واقعہ کی عدالتی تحقیقات کروائی جائے۔ تاہم کانگریس کے الزامات کو مسترد کرتے ہوئے وزیر پارلیمانی امور محمد اعظم خاں نے کہا کہ احتجاج میں آپ تمام (ارکان اسمبلی) شریک تھے لیکن کوئی ایک بھی زخمی نہیں ہوا۔ آپ لوگوں نے اپنے آپ کو محفوظ رکھنے کیلئے معصوم افراد کو سامنے کیا اور جن لوگوں نے لوٹ مار اور سنگباری کی ہے ممکن ہیکہ پولیس نے ان کی پٹائی کردی ہو۔ شوروغل اور ہنگامہ آرائی کے دوران اسپیکر ماتا پرساد پانڈے نے 10 منٹ کیلئے ایوان کی کارروائی ملتوی کردی۔ بعدازاں 11.30 بجے ایک بار اور 12.20 بجے تک دوسری بار توسیع کی جس کے باعث وقفہ صفر تعطل کا شکار ہوگیا۔ دریں اثناء اجلاس کی کارروائی دوبارہ شروع ہونے کے کچھ دیر بعد کانگریس ارکان ایوان کے وسط میں پہنچ کر پرشور احتجاج کیا۔ اسپیکر کی جانب سے ایوان میں نظم و ضبط کی بحالی کیلئے بارہا کوشش کے باوجود کانگریس ارکان نعرہ بازی کرتے رہے، جس پر پھر ایک بار کارروائی کو 1بجے تک ملتوی کردیا گیا۔ کانگریس ارکان کے بغیر اسمبلی میں سپلیمنٹری بحث منظور کرلیا گیا اور کل تک کیلئے اجلاس ملتوی کردیا گیا۔ قانون ساز کونسل میں بھی کانگریس ارکان اس طرح کا حربہ اختیار کرتے ہوئے ایوان کے وسط میں دھرنا دیا، جس پر دوپہر تک کارروائی ملتوی کردی۔ بعدازاں مقررہ ایجنڈہ کی تکمیل کے بعد کل تک کیلئے اجلاس ملتوی کردی گئی۔ واضح رہیکہ کل ریاستی حکومت کے خلاف کانگریس کا چلو اسمبلی احتجاج تشدد کا رخ اختیار کر گیا جس میں متعدد کانگریس کارکنان اور پولیس ملازمین زخمی ہوگئے تھے۔

TOPPOPULARRECENT