Sunday , June 25 2017
Home / Top Stories / اتر پردیش میں سب کا ساتھ سب کا وکاس کے اصول پر چلے گی حکومت: راجناتھ

اتر پردیش میں سب کا ساتھ سب کا وکاس کے اصول پر چلے گی حکومت: راجناتھ

نئی دہلی۔23 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) مرکزی وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ نے آج یقین دہانی کرائی کہ اتر پردیش کی نئی حکومت ‘سب کا ساتھ، سب کا وکاس’ کے اصول پر چلے گی اور کسی کے ساتھ بھی ذات یا مذہب کی بنیاد پر قطعی کوئی امتیازی سلوک نہیں کرے گی۔لوک سبھا میں وقفہ صفر میں کانگریس کی محترمہ رنجیتا رنجن نے اترپردیش میں نئی حکومت کے بنتے ہی ‘اینٹی رومیو اسکواڈ’ کی طرف سے دوست لڑکے لڑکیوں کو غیر قانونی طریقے سے ذلیل کئے جانے اور دلتوں، یادوؤں اور اقلیتوں کے خلاف نفرت پھیلائے جانے کے الزام لگائے اور اسے روکنے کا مطالبہ کیا۔وزیر داخلہ نے اس پر جواب دیتے ہوئے کہا کہ ریاست کی حکومت کو قائم ہوئے ابھی دو تین دن ہی ہوئے ہیں،وہاں جس بھارتیہ جنتا پارٹی کی حکومت بنی ہے ، اس نے واضح طور پر کہا ہے کہ وہ ذات یا مذہب کی بنیاد پر کوئی امتیاز نہیں کرے گی۔وزیر اعلی یوگي آدتیہ ناتھ نے بھی اپنے پہلے پریس کانفرنس میں کہا ہے کہ ان کی حکومت سب کا ساتھ سب کا وکاس کے اصول پر کام کرے گی۔مسٹر سنگھ نے کہا کہ اگر محترمہ رنجن کسی خاص واقعہ کے بارے میں کچھ کہنا چاہتی ہیں تو وہ اس جانب توجہ دی جائے گی۔اس سے قبل محترمہ رنجن نے کہا کہ ریاست میں نئی حکومت کے بنتے ہی نوجوانوں اور بچیوں کو پولیس ہراساں کر رہی ہے ۔ پارک میں اگر کوئی باوقار طریقے سے بھی بیٹھا ہے تو بھی اسے تنگ کیا جا رہا ہے ۔ آخر کیا معیار ہے جس کی بنیاد پر پولیس ایسی کارروائی کر رہی ہے ۔گرل فرینڈ یا بوائے فرینڈ ہونا کس طرح غیر قانونی ہے ۔ کیا کسی کو محبت کرنے کا حق نہیں ہے ۔اس کے بعد انہوں نے یہ بھی کہا کہ اتر پردیش میں یادووں، مسلمانوں اور دلتوں کے خلاف نفرت پھیلائی جا رہی ہے ۔وزیر داخلہ نے محترمہ رنجیتا کے سوال کے دوسرے حصے کا تو جواب دیا لیکن پہلے حصے پر وہ کچھ نہیں بولے ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT