Monday , September 25 2017
Home / Top Stories / اتوار کے دن بھی عوام کا حصول رقم کیلئے ہجوم، شہری بے یار و مددگار

اتوار کے دن بھی عوام کا حصول رقم کیلئے ہجوم، شہری بے یار و مددگار

بینکس، پوسٹ آفس، اے ٹی ایم مراکز پر مرد و خواتین کی بڑی بڑی قطاریں، رقم کیلئے در در بھٹکنے پر مجبور
حیدرآباد۔13نومبر (سیاست نیوز) اتوار کی تعطیل کے باوجود دونوں شہروں کے کئی علاقوں میں گہما گہمی دیکھی گئی اور کئی مقامات پر روز کی طرح مصروف دن دیکھا گیا اس کے برعکس شہر کے تفریحی مقامات پر سیاحوں کی تعداد کم دیکھی گئی اور سینما ہال میں بھی شہریوں کی کم تعداد دیکھی گئی۔شہر میں اتوار کی تعطیل کے سبب بینکوں اور اے ٹی ایم کے سامنے طویل قطاریں دیکھی گئیں اور کئی مقامات پر عوام کو بینک عہدیداروں پر برہمی کا اظہار کرتے دیکھا گیا۔ دونوں شہروں میں پوسٹ آفس اور بینکوں کے علاوہ اے ٹی ایم کے سامنے طویل قطاریں اور عوامی برہمی کے کئی واقعات دیکھے گئے کیونکہ کئی بینکوں نے نقدی ختم ہونے کا اعلان کرتے ہوئے قبل از وقت بینکوں کو بند کرنے کا اعلان کردیا بینکوں کے ذمہ داران کا کہنا ہے کہ ریاست میں اتوار کی تعطیل کے سبب بینکوں کے سامنے طویل قطاریں رہیں اور بینکرس نے گذشتہ یوم ہی اس توقع کے ساتھ کچھ تو راحت پہنچانے کے اقدامات کئے تھے لیکن توقع سے زیادہ ہجوم کے سبب بینک عملہ کو بھی دشواریوں کا سامنا کرنا پڑا۔ طویل قطارو ںمیں موجود عوام نے حکومت کے فیصلہ کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ حکومت معصوم عوام کو ان کے اپنے پیسے بینکوں سے نکالنے کیلئے دشواریوں میں ڈال چکی ہے۔ جو شہری بینک میں جمع پیسے کو برے وقت کا سہارا تصور کرتے تھے وہ شہری اب بینک میں جمع پیسے نکالنے کیلئے برے وقت کا سامنا کر رہے ہیں۔ پرانے شہر میں مختلف بینکو ںکے روبرو جمع بھیڑ میں خواتین بحالت مجبوری ان قطاروں میں کھڑی ہیں کیونکہ ان کے اپنے اکاؤنٹ سے انہیں روز مرہ کے اخراجات کے لئے بینک سے پیسے نکالنے ہیں یا پھر انہیںاپنے کھاتوں میں پیسے جمع کروانے ہیں۔ شہر کے بینکوں میں عوام کے اژدہام کے سبب کئی مشکلات کا سامنا کرناپڑا ۔نوجوان اور خواتین معصوم بچوں کے ساتھ قطاروں میں دیکھے گئے۔ہر شخص کی کوشش یہ رہی کہ کسی طرح سے جلد از جلد 1000اور 500کے نوٹ تبدیل کریں یا بینک سے پیسہ نکالیں۔ پرانے شہر کے پوسٹ آفسوں میں بھی قلیل مدت میں کرنسی پہنچنے کے سبب شہریوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔ 14نومبر کو گرونانک جینتی کی تعطیل اور مختلف اطلاعات کے سبب شہریوں میں بے چینی کی لہر دیکھی جاتی رہی اور جو لوگ بینک سے پیسہ نکالنے میں کامیاب ہو رہے ہیں وہ لوگ اشیائے ضروریہ کی خریداری میں مصروف دیکھے گئے۔ ریسٹورنٹ اور ہوٹلوں کے کاروبار آج اتوار کے باوجود بھی متاثر رہے حالانکہ اتوار کے دن شہر کے کئی تفریحی مقامات پر عوام کی کثیر تعداد ہوا کرتی تھی لیکن 1000اور 500روپئے کے نوٹوں کے چلن کو بند کئے جانے کے بعد پہلے اتوار کو حالات انتہائی ناگفتہ بہ رہے اور کاروبار متاثر دیکھے گئے۔

TOPPOPULARRECENT