Saturday , April 29 2017
Home / شہر کی خبریں / اجلاس میں کارکردگی سے زیادہ شخصی مخاصمت دکھائی دی

اجلاس میں کارکردگی سے زیادہ شخصی مخاصمت دکھائی دی

میں نے حق کی بات کیلئے اجلاس کا بائیکاٹ کیا۔ وحید احمد
حیدرآباد۔/11مارچ، ( سیاست نیوز) وقف بورڈ کے رکن ایم اے وحید ایڈوکیٹ نے بورڈ کے بعض ارکان کی جانب سے چیف ایکزیکیٹو آفیسر کے خلاف معطلی کے مطالبہ کی مخالفت کرتے ہوئے اجلاس کا بائیکاٹ کردیا۔ اجلاس کے آغاز سے ہی مقامی جماعت کے ارکان بورڈ کی کارروائی پر حاوی ہونے کی کوشش کررہے تھے اور ان حالات میں صدرنشین جناب محمد سلیم بے بس نظر آرہے تھے۔ چیف ایکزیکیٹو آفیسر پر الزامات عائد کرتے ہوئے ان کی معطلی اور ان کے خلاف ایف آئی آر درج کرنے سے متعلق تحریک کی ایم اے وحید ایڈوکیٹ نے شدت سے مخالفت کی۔ انہوں نے کہا کہ بورڈ کو محمد اسد اللہ جیسے دیانتدار عہدیداروں کی ضرورت ہے۔ اجلاس کے بائیکاٹ کے بعد میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے ایم اے وحید ایڈوکیٹ نے کہا کہ بعض ارکان کی جانب سے چیف ایکزیکیٹو آفیسر کی معطلی کے سلسلہ میں تمام ارکان پر دباؤ ڈالا جارہا تھا۔ انہوں نے اس کی مخالفت کی اور ایسے فیصلوں سے خود کو علحدہ کرنے کیلئے اجلاس کا بائیکاٹ کردیا۔ انہوں نے کہا کہ بعض ارکان سارے اجلاس پر اثرانداز ہوتے ہوئے اپنے فیصلوں کو مسلط کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اجلاس کا ایجنڈہ صدرنشین کو اختیارات تفویض کرنا تھا لیکن ایجنڈہ کے برخلاف 4 گھنٹوں تک صرف چیف ایکزیکیٹو آفیسر کے مسئلہ پر ہی بات چیت ہوئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کے ارکان نے چیف ایکزیکیٹو آفیسر کے خلاف کارروائی کی شدت سے مخالفت کی۔ ایم اے وحید کے مطابق محمد اسد اللہ کی خدمات حکومت کو واپس کرنے سے متعلق قرارداد پر ان کی دستخط نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ بورڈ میں آج کی کارروائی اور بعض ارکان کے رویہ کے سلسلہ میں وہ حکومت کو رپورٹ کے ذریعہ آگاہ کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ اوقافی جائیدادوں کا تحفظ ان کی اولین ترجیح ہوگی اور اسی مقصد سے حکومت نے انہیں بورڈ میں نامزد کیا ہے۔ وحید احمد ایڈوکیٹ نے ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی سے ملاقات کرتے ہوئے بورڈ کی روداد سے واقف کرایا۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT