Friday , September 22 2017
Home / Top Stories / اجیت جوگی اور گرو داس کامت کانگریس سے مستعفی

اجیت جوگی اور گرو داس کامت کانگریس سے مستعفی

چھتیس گڑھ میں نئی پارٹی بنانے جوگی کا اعلان ۔ گرو داس کامت سرگرم سیاست سے سبکدوش ہوجائیں گے
مارواہی / ممبئی  6 جون ( سیاست ڈاٹ کام ) چار ریاستوں میں اسمبلی انتخابات کی شکست سے کانگریس پارٹی ابھی سنبھل نہیں پائی تھی کہ اسے آج ایک اور جھٹکا لگا جب کانگریس ورکنگ کمیٹی کے ارکان اجیت جوگی اور گرو داس کامت نے پارٹی سے استعفی پیش کردیا ۔ اجیت جوگی چھتیس گڑھ کے سابق چیف منسٹر ہیں اور انہوں نے رسمی طور پر اعلان کیا کہ وہ نئی سیاسی جماعت قائم کرینگے ۔ گرو داس کامت نے سیاست سے ہی مکمل سبکدوشی کا اعلان کیا ہے ۔ اجیت جوگی گذشتہ کچھ وقت سے پارٹی سے ناراض تھے ۔ وہ اس بات پر برہم تھے کہ پارٹی نے ان کے فرزند امیت جوگی کو خارج کردیا تھا ۔ امیت جوگی کے کچھ آڈیو ٹیپس سامنے آئے تھے جن میں انہوں نے چھتیس گڑھ میں ایک ضمنی انتخاب کو بی جے پی کے حق میں کرنے بات کی تھی ۔ اجیت جوگی نے اعلان کیا کہ وہ ایک نئی سیاسی جماعت قائم کرینگے جو چھتیس گڑھ میں بی جے پی کا مقابلہ کریگی ۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ ریاست میں کانگریس پارٹی بی جے پی کی بی ٹیم بن گئی ہے ۔ کانگریس کی ریاستی یونٹ نے سفارش کی ہے کہ اجیت جوگی کی رکنیت کو ختم کیا جائے کیونکہ کانگریس ورکنگ کمیٹی کے کسی رکن کے خلاف کارروائی کا اختیار صرف پارٹی ہائی کمان کو ہی ہے ۔ تاہم کانگریس کی مرکزی قیادت نے اجیت جوگی کے تعلق سے انتظار کرو اور دیکھو کی پالیسی اختیار کی ہے ۔ اجیت جوگی نے اپنے فرزند امیت کے حلقہ انتخاب مارواہی میں تقریبا 10 ہزار افراد کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اب وہ آزاد ہیں۔ انہیں عوام اور بہی خواہوں کی دعائیں حاصل ہیں۔ انہوں نے کہا کہ آج کے دن کوتمی گاؤں سے چھتیس گڑھ کی تاریخ میں ایک نئے دور کا آغاز ہو رہا ہے ۔ اب چھتیس گڑھ کے عوام اپنی تقدیر خود لکھیں گے ۔ اب چھتیس گڑھ کے فیصلے صرف چھتیس گڑھ ہی میں ہونگے ۔ انہوں نے کہا کہ مارواہی کے عوام اور بہی خواہوں کی تائید سے یہ فیصلہ کیا گیا ہے کہ ایک نئی پارٹی قائم کی جائیگی ۔ نئی پارٹی چھتیس گڑھ کی اپنی پاری ہوگی ۔ جو لوگ یہاں موجود تھے انہیں رائے دینے کیلئے فارمس بانٹے گئے جس میں ان سے پارٹی کے نام اور امتیازی نشان کے تعلق سے رائے طلب کی گئی ہے ۔ جوگی کے ساتھ ان کی شریک حیات رینو ‘ کانگریس رکن اسمبلی کوٹا ‘ فرزند امیت ‘ گندر دیہی کے رکن اسمبلی راجیندر کمار رائے ‘ بلہا کے رکن اسمبلی سیا رام کوشک اور اسبق ارکان اسمبلی ودھان مشرا اور دھرمجیت سنگھ موجود تھے ۔ جوگی کے کئی حامی گاندھی ٹوپی پہنے ہوئے تھے جن پر ’ میں جوگی ہوں ۔ جئے جوگی ‘ کے نعرے تحریر تھے ۔ ان کے ہاتھوں میں پوسٹرس بھی تھے جن پر ’ اب کی بار ۔ جوگی سرکار ‘ کا نعرہ بھی تحریر تھا ۔ گرو داس کامت کی علیحدگی تاہم زیادہ شور شرابہ سے عاری رہی ۔ 61 سالہ سابق مرکزی وزیر نے آج شام ممبئی میں ایک بیان میڈیا کیلئے جاری کیا ہے جس میں انہوں نے کہا کہ وہ گذشتہ 44 سال سے کانگریس کیلئے کام کرتے رہے ۔ گذشتہ کچھ عرصہ سے وہ محسوس کر رہے تھے کہ انہیں دوسروں کیلئے موقع فراہم کرنا چاہئے ۔ کامت پانچ مرتبہ کے رکن پارلیمنٹ تھے ۔ انہوں نے کہا کہ وہ دس دن قبل کانگریس صدر سے ملاقات کرچکے ہیں اور استعفی دینے کی خواہش ظاہر کرچکے ہیں۔ وہ سونیا گاندھی اور راہول گاندھی کو پارٹی سے علیحدگی کا مکتوب روانہ کرچکے ہیں۔ وہ سیاست سے سبکدوش ہو رہے ہیں۔ وہ پارٹی قیادت کیلئے نیک تمناؤں کا اظہار کرتے ہیں۔ کل ہند کانگریس نے کامت کے فیصلے پر کسی رد عمل کا اظہار نہیں کیا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT