Saturday , August 19 2017
Home / عرب دنیا / احتجاج کے جواب میں تیز رفتار اصلاحات کی اپیل

احتجاج کے جواب میں تیز رفتار اصلاحات کی اپیل

حیدر العبادی کی عوام سے خواہش ، مجوزہ اصلاحات کو کابینہ اور پارلیمنٹ کی منظوری متوقع
بغداد۔ 9 اگست (سیاست ڈاٹ کام) وزیراعظم عراق حیدر العبادی نے آج تیز رفتار اصلاحات کی اپیل کی جن میں اپنے حریف نوری المالکی کے عہدہ کی برخاستگی بھی شامل ہے۔ گزشتہ چند ہفتوں سے کرپشن اور ناقص خدمات کے خلاف احتجاجی مظاہرے کئے جارہے ہیں۔ مجوزہ اصلاحات جن میں سے چند کیلئے کابینی اور پارلیمنٹ کی منظوری ضروری ہے، عراق کے اعلیٰ سطحی عالم دین آیت اللہ علی السیستانی کی اپیل کے بعد منظر عام پر آئے ہیں جنہوں نے چند سخت اقدامات کی خواہش کی تھی۔ سب سے زیادہ سخت تجویز ایک بیان کا خاکہ ہے جو آن لائن شائع کیا گیا ہے، اس میں نائب صدر اور نائب وزیراعظم کے عہدوں کی ’’فوری‘‘ برخاستگی شامل ہے۔ نوری المالکی جو قبل ازیں بحیثیت وزیراعظم، حیدرالعبادی کے پیشرو ہیں، فی الحال عراق کے نائب صدور میں شامل ہیں۔ اس عہدہ کی برخاستگی ان کیلئے ایک کاری ضرب ثابت ہوگی لیکن اس سے وزیراعظم کی مخلوط حکومت کیلئے بھی مشکلات پیدا ہوسکتی ہیں جس میں ان کے حریف کے ارکان بھی شامل ہیں۔ نوری المالکی اسی دعوۃ پارٹی کے قائد ہیں، جو اب بھی نمایاں اثر و رسوخ رکھتی ہے،

لیکن واضح طور پر اس تبدیلی کیلئے دستور میں ترمیم بھی ضروری ہوگی چنانچہ فوری کارروائی کا کوئی امکان نہیں ہے۔ حیدرالعبادی نے بڑے پیمانے پر سرکاری عہدیداروں بشمول وزراء میں ردوبدل کی بھی خواہش کی ہے۔ انہوں نے ایک کُل جماعتی اور فرقہ وارانہ کوٹہ ختم کرنے کی اپیل کی ہے۔ کمیٹی جن امیدواروں کو منتخب کرتی ہے، انہیں وزیراعظم مقرر کیا جاتا ہے۔ انہوں نے جامع اور فوری تخفیف کا بھی مطالبہ کیا ہے۔ تمام سرکاری عہدیداروں کے محافظین کی تعداد میں کمی کی جائے گی۔ یہ ایک طویل مدتی مسئلہ ہے۔ بعض عہدیداروں کے شخصی تحفظ کیلئے کئی محافظین مقرر ہیں اور دیگر عہدیدار مقررہ تعداد سے کم تعداد میں محافظین عارضی طور پر حاصل کرنے پر مجبور ہوگئے ہیں۔ بغداد اور دیگر شہروں میں کئی ہفتوں سے ناقص معیار کی خدمات خاص طور پر برقی سربراہی میں بار بار خلل اندازی کی وجہ سے مصائب کا شکار ہیں کیونکہ درجہ حرارت 50 درجہ سیلسیس ہے۔ احتجاجی مظاہروں میں خدمات کے بحران، کرپشن اور سیاسی طبقہ کی نااہلی کو تنقید کا نشانہ بنایا گیا ہے۔ سیستانی جو لاکھوں عراقیوں کیلئے ایک محترم شخصیت ہیں، اپنے خطبہ جمعہ میں حیدرالعبادی سے بڑے پیمانے پر سخت اقدامات خاص طور پر کرپشن کے خاتمہ کیلئے کرنے کا مطالبہ کرچکے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ معمولی اقدامات جن کا پہلے بھی اعلان کیا جاچکا ہے، ناکافی ہیں۔

TOPPOPULARRECENT