Saturday , August 19 2017
Home / سیاسیات / احمد پٹیل کا راجیہ سبھا کیلئے پرچہ نامزدگی داخل

احمد پٹیل کا راجیہ سبھا کیلئے پرچہ نامزدگی داخل

گاندھی نگر، 26 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) صدر کانگریس سونیا گاندھی کے سیاسی مشیر احمد پٹیل نے گجرات میں تین راجیہ سبھا سیٹوں پر آئندہ 8 اگست کو ہونے والے انتخابات کے لئے آج پرچہ نامزدگی داخل کی۔ اس موقع پر جے ڈی یو کے واحدممبر اسمبلی اور نیشنلسٹ کانگریس کے دونوں رکن اسمبلی بھی موجود تھے اور انہوں نے ان کی حمایت کا اعلان کیا۔ ریاست کی کل 11 میں سے جن تین راجیہ سبھا سیٹوں پر انتخاب ہونا ہے ان میں سے ایک پر گزشتہ مرتبہ احمد پٹیل ہی منتخب ہوئے تھے ۔ دو دیگر سیٹیں بی جے پی کی سمرتی ایرانی (مرکزی وزیر اطلاعات و نشریات) اور دلیپ پانڈیا کی ہیں۔ سال 1993سے مسلسل چار بار راجیہ سبھا کے لئے منتخب ہونے والے 67 سالہ احمد پٹیل اگر اس بار بھی جیت جاتے ہیں تو وہ مسلسل پانچویں بار پارلیمنٹ کے ایوان بالا کے رکن بن جائیں گے ۔

نائیڈو پر الزامات کا مودی جواب دیں:کانگریس
نئی دہلی، 26 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) کانگریس نے آج کہا کہ تلنگانہ حکومت نے اعتراف کیا ہے کہ قومی جمہوری اتحاد (این ڈی اے) کے نائب صدر کے عہدے کے امیدوار ایم وینکیا نائیڈو کے بیٹے اور بیٹی کو فائدہ پہنچانے کے لئے قوانین کی خلاف ورزی کی گئی ہے، لہٰذا وزیراعظم نریندر مودی کو اس کا جواب دینا چاہئے ۔ کانگریس کمیونیکیشن سیل کے سربراہ رندیپ سنگھ سرجے والا نے یہاں پریس کانفرنس میں کہا کہ تلنگانہ حکومت نے کہا ہے کہ وینکیا نائیڈو کی بیٹی کے ٹرسٹ سورن بھارتی کو تعمیری فیس میں 246 کروڑ روپے کی چھوٹ دی گئی تھی۔ خود وینکیا نائیڈو نے مختصر جواب میں اعتراف کیا ہے کہ ان کی بیٹی کے ٹرسٹ کے ساتھ ہی 16 دیگر ٹرسٹوں کو بھی اس کا فائدہ ہوا ہے۔ سرجے والا نے الزام لگایا کہ سورن بھارتی ٹرسٹ کو بیرون ملک سے چندہ لینے کے معاملے میں قوانین کی خلاف ورزی کرنے کی پاداش میں نوٹس موصول ہوا ہے ۔ انہوں نے سوال کیا کہ ایسے ٹرسٹ کو کس بنیاد پر یہ رعایت دی گئی ہے جسے پہلے ہی قوانین کی خلاف ورزی کا مرتکب ہونے کے معاملے میں نوٹس دیا گیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ تلنگانہ حکومت نے یہ بھی اعتراف کیا ہے کہ نائیڈو کے بیٹے کی کمپنی ھرشا ٹویوٹا سے ریاستی حکومت کو 350 گاڑیوں کی فراہمی کی گئی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT