Thursday , October 19 2017
Home / Top Stories / اخلاق کے خاندان کیخلاف ایف آئی آر درج کرنے کاحکم

اخلاق کے خاندان کیخلاف ایف آئی آر درج کرنے کاحکم

دادری واقعہ میں جوڈیشیل مجسٹریٹ کی کارروائی
گریٹر نوئیڈا 14 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) دادری اخلاق قتل کیس کو ایک نیا موڑ دیتے ہوئے عدالت نے آج مبینہ گاؤکشی کے الزام میں اخلاق کے خاندان کے خلاف ایف آئی آر درج کرنے کا حکم دیا ہے۔ سینئر استغاثہ عہدیدار ڈی ایس آر ترپاٹھی نے کہاکہ جوڈیشیل مجسٹریٹ اودے کمار نے اِس کیس کو درج رجسٹر کرنے کے لئے تعزیرات ہند کی دفعہ 156(3) کے تحت داخل کردہ درخواست پر کارروائی کی ہے اور انھوں نے اخلاق کے خاندان کے خلاف گاؤکشی کا ایف آئی آر درج کرنے کی ہدایت دی۔ دادری میں بیساڑہ ولیج کے مکینوں نے سینئر سپرنٹنڈنٹ پولیس گوتم بدھ نگر سے 5 جون کو ملاقات کرتے ہوئے محمد اخلاق کے ارکان خاندان کے خلاف ایف آئی آر درج کرنے کا مطالبہ کیا تھا کیوں کہ اِس خاندان نے مبینہ طور پر گاؤکشی انجام دی تھی۔ اِس درخواست کے پیش نظر تحقیقات کا حکم دیا گیا تھا۔ سینئر سپرنٹنڈنٹ پولیس دھرمیندر یادو نے کہاکہ اخلاق کے خاندان کے خلاف کیس درج کیا گیا ہے۔ اخلاق کے گھر میں جو گوشت دستیاب ہوا تھا وہ بیف کا تھا۔ اخلاق کو گزشتہ سال 29 ستمبر کو ایک ہجوم نے زدوکوب کرکے ہلاک کیا تھا۔ ہجوم کو شبہ تھا کہ اِس خاندان نے اپنے گھر میں بیف کا گوشت کھاکر اِس کا ذخیرہ بھی کرلیا ہے۔ فارنسک لیاب میں اخلاق کے گھر سے دستیاب گوشت کو بیف قرار دیا گیا تھا۔ 8 اکٹوبر 2015 ء کو شکایت کی یہ کاپی سینئر سپرنٹنڈنٹ پولیس، ڈی آئی جی اور دیگر سینئر عہدیداروں کو روانہ کی گئی تھی اور اِن سے درخواست کی گئی تھی کہ وہ اخلاق کے ارکان خاندان کے خلاف گاؤکشی کے الزام میں ایف آئی آر درج کریں۔ اِس درخواست کو اِن عہدیداروں نے جوڈیشیل مجسٹریٹ کورٹ سے رجوع کیا۔ اِس کے بعد عدالت نے ایف آئی آر درج کرنے پولیس کو ہدایت دی۔

TOPPOPULARRECENT