Saturday , August 19 2017
Home / ہندوستان / اخلاق کے گھر سے گائے کا نہیں بلکہ بکرا کا گوشت دستیاب ہوا تھا: رپورٹ

اخلاق کے گھر سے گائے کا نہیں بلکہ بکرا کا گوشت دستیاب ہوا تھا: رپورٹ

نئی دہلی۔ 28 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) دادری میں ایک ضعیف مسلم شخص کو جنونی ہجوم کے ہاتھوں مار مار کر ہلاک کردینے کے رسوائے زمانہ واقعہ کی تحقیقات سے متعلق اپنی ایک رپورٹ میں چیف وٹرنری آفیسر نے کہا ہے کہ متوفی کے گھر سے دستیاب گائے کا نہیں بلکہ بکرے کا گوشت دستیاب ہوا تھا۔ وٹرنری آفیسر نے اپنی رپورٹ میں کہا کہ ’’بادی النظر میں ایسا معلوم ہوتا ہے کہ مار مار کر ہلاک کئے جانے والے شخص کے گھر سے دستیاب گوشت گائے کا نہیں بلکہ بکرے کا تھا‘‘۔ رپورٹ میں یہ بھی کہا گیا کہ نمونوں کو حتمی تشخیص و معائنہ کے لئے حاصل کرلیا گیا ہے، جنہیں متھرا کی فارنسک لیباریٹری کو منتقل کیا جارہا ہے۔ 50 سالہ اخلاق کی ہلاکت کے اس واقعہ کے ضمن میں گوتم بدھ نگر پولیس نے ایک نابالغ کے بشمول 15 افراد کے خلاف مقدمہ درج کئے جانے کے ایک ہفتہ سے بھی کم مدت کے دوران یہ رپورٹ منظر عام پر آئی ہے۔ واضح رہے کہ اُترپردیش کے ضلع گوتم بدھ نگر کے دادری کے تحت موضع بشارہ میں 28 ستمبر کو ایک جنونی ہجوم نے محض اس افواہ پر اخلاق اور اس کے 20 سالہ بیٹے دانش کو بے رحمانہ انداز میں مارپیٹ کی تھی جس میں اخلاق فوت ہوگئے تھے اور ان کا بیٹا شدید زخمی ہوگیا تھا۔

TOPPOPULARRECENT