Friday , August 18 2017
Home / ہندوستان / ادہم پور حملہ کیس میں لاری کا پارٹنر گرفتار

ادہم پور حملہ کیس میں لاری کا پارٹنر گرفتار

پاکستانی عسکریت پسند کو ٹرانسپورٹ سہولت کی فراہمی کا الزام
سرینگر ۔ 14 ۔ اکٹوبر : ( سیاست ڈاٹ کام ) : جاریہ سال ماہ اگست میں دہشت گردانہ حملہ انجام دینے کے لیے ایک پاکستانی عسکریت پسند نوید نے ادہم پور تک جس ٹرک میں سفر کیا تھا اس گاڑی کے پارٹنر کو قومی تحقیقاتی ایجنسی ( این آئی اے ) گرفتار کرلیا ہے ۔ صفدر احمد نے کشمیر میں گھس آئے لشکر طیبہ کے عسکریت پسند کو ٹرانسپورٹ کی سہولت فراہم کی تھی ۔ اسے کل شام جنوبی کشمیر میں کلگام سے گرفتار کرلیا گیا ۔ این آئی اے ذرائع نے بتایا کہ صفدر احمد جو اس ٹرک کا ڈرائیور اور پارٹنر تھا جس میں نوید ایک اور عسکریت پسند محمد نعمان کے ساتھ 5 اگست کو ادہم پور تک سفر کیا تھا ۔ باور کیا جاتا ہے کہ لشکر طیبہ کے 4 عسکریت پسند محمد نوید یعقوب ، محمد بھائی ، ابوعکاظ اور نعمان کا ایک گروپ ضلع بارہمولہ سے بابا ریشی کی سرحد سے ہندوستان میں داخل ہوا تھا ۔ بعد ازاں یہ گروپ 2 حصوں میں منقسم ہوگیا ۔ ایک گروپ نے 5 اگست کو ادہم پور میں بی ایس ایف قافلہ پر حملہ کردیا جس کے دوران نوید گرفتار اور اس کا ساتھی محمد نعمان ہلاک ہوگیا ۔ آئی این اے نے پہلے ہی شوکت احمد بھٹ اور خورشید احمد کو گرفتار کرلیا جن پر کشمیر میں عسکریت پسندوں کو آمد و رفت کی سہولت فراہم کرنے کا الزام ہے ۔

TOPPOPULARRECENT