Monday , September 25 2017
Home / کھیل کی خبریں / اذلان شاہ کپ میں سریجیش کو ہندوستانی ٹیم کی کمان

اذلان شاہ کپ میں سریجیش کو ہندوستانی ٹیم کی کمان

نئی دہلی۔11 اپریل۔(سیاست ڈاٹ کام) ہاکی انڈیا (ایچ آئی ) نے 29 اپریل سے ملیشیا کے ایپوہ میں شروع ہونے والے 26 ویں سلطان اذلان شاہ کپ کے لئے 18 رکنی ہندستانی سینئر ہاکی ٹیم کا اعلان کر دیا جس کی کمان تجربہ کار گول کیپر پی آر سریجیش کو سونپی گئی ہے ۔ہندستانی ٹیم کی کمان تجربہ کار گول کیپر سریجیش کو سونپی گئی ہے جنہیں حال میں پدم شری ایوارڈ سے نوازا گیا ہے ۔من پریت سنگھ کو نائب کپتان بنایا گیا ہے ۔ٹیم میں تجربہ کار کھلاڑی سردار سنگھ، چگلنسانا سنگھ کگجم، ھرجیت سنگھ، سمیت اور من پریت مڈفیلڈ میں اہم کردار سنبھالیں گے ۔دفاع میں روپندر پال سنگھ، پردیپ مور، ھرمن پریت اور فارورڈز لائن میں ایس وی سنیل، تلوندر سنگھ اور آکاش دیپ جیسے تجربہ کار کھلاڑی شامل ہوں گے ۔قومی ٹیم کو 2018 عالمی کپ اور 2020 ٹوکیو اولمپکس کے لیے ابھی سے تیار کرنے کی سمت میں قدم اٹھاتے ہوئے چیف کوچ رولنٹ اولٹمنس نے ٹیم میں نوجوان اور تجربہ کار کھلاڑیوں کو شامل کیا ہے ۔اولٹمنس نے قومی کیمپ سے قبل بھی سینئر ٹیم میں جونیئر کھلاڑیوں کو موقع دیئے جانے کی بات کہی تھی اور اسی کے پیش نظر ملیشیا جانے والی ٹیم میں کوچ نے ہندوستانی جونیئر ٹیم سے چار کھلاڑیوں کو شامل کیا ہے ۔ان میں جونیئر عالمی کپ فاتح ٹیم کا حصہ رہے دفاعی کھلاڑی گروندر سنگھ، مڈفیلڈر سمیت اور من پریت اور گزشتہ سال انگلینڈ کے دورے پر گئی جونیئر ٹیم میں شامل ممبئی کے 21 سالہ گول کیپر سورج کارکیرا کو اذلان شاہ کپ میں ڈیبو کا موقع دیا جا رہا ہے ۔جونیئر ورلڈ کپ فاتح ٹیم سے ڈریگ فلکر ھرمن پریت سنگھ، کپتان ھرجیت سنگھ اور فارورڈز مندیپ سنگھ کو بھی سینئر ٹیم میں جگہ ملی ہے ۔تینوں کھلاڑیوں نے جونیئر ورلڈ کپ ٹائٹل جیتنے میں اہم کردار ادا کیا تھا اور گزشتہ سال بھی اذلان شاہ کپ میں کھیل چکے ہیں جب ہندستان نے چاندی کا تمغہ جیتا تھا۔ ہندستان فائنل میں آسٹریلیا سے ہار کر طلائی سے چوک گیا تھا۔اولٹمنس نے کہا کہ ہماری منصوبہ بندی اس سال ہونے والے تین اہم ٹورنامنٹوں ورلڈ لیگ سیمی فائنل، ایشیا کپ اور اوڈیشہ میں ہونے والے مرد ہاکی لیگ فائنل سے پہلے نئے کمبی نیشن کو اتارناہے ۔

ان ٹورنامنٹوں سے پہلے بھی ہمیں بلجیم اور جرمنی سے کھیلنا ہے اور اس کے بعد ہمیں اگست میں ورلڈ لیگ سیمی فائنل میں بلجیم اور ہالینڈ سے کھیلنا ہے ۔یہ بڑی ٹیمیں ہیں اور ان کے خلاف ہمیں پتہ چل سکے گا کہ ہمارے یہ کھلاڑی توقعات پر کھرے اترتے ہیں یا نہیں۔انہوں نے کہا کہ ہم ملیشیا ایسی ٹیم لے جا رہے ہیں جس میں نوجوان اور تجربہ کار کھلاڑیوں کا اچھا تال میل ہے ۔ہمارے لئے یہ چیلنج ہے کہ یہ کھلاڑی آسٹریلیا، برطانیہ اور نیوزی لینڈ جیسی بڑی ٹیموں کے خلاف کھیل پاتے ہیں یا نہیں۔مجھے نہیں لگتا کہ ملیشیا اور جاپان کی ٹیمیں اتنی تبدیلیوں کے ساتھ اترے گي اور شاید وہ گزشتہ اکتوبر میں ایشیائی چمپئنز ٹرافی میں جن ٹیموں کے ساتھ کھیلی تھیں انہی کے ساتھ کھیلیں گی۔اولٹمنس نے کہا کہ یہاں تک کہ اگر ہندستانی ٹیم نئی ہے لیکن اس کا مقصد بالآخر جیتنا ہی ہے اور بہتر نتائج نکالنا ہے ۔انہوں نے کہا کہ ہمارے پاس یہ دیکھنے کا موقع ہے کہ کس طرح یہ کھلاڑی آگے بڑھ رہے ہیں اور کھیل میں بہتر ی کر رہے ہیں۔سب کو اس بات کا بھی پتہ چل جائے گا جب ٹیم میں نئے کھلاڑی کھیل رہے ہیں تو کس طرح کی تبدیلیوں اور ڈھانچے کو تیار کرنے کی ضرورت ہے ۔انڈین نیشنل کوچ نے کہا کہ ابھی تک نئے کھلاڑیوں نے بھی امید کے حساب سے ہی کارکردگی کی ہے ۔لیکن مجھے لگتا ہے کہ اس کے باوجود کچھ اتار چڑھاو تو ضرور دیکھنے کو ملیں گے ۔لیکن ہماری کوشش یہی ہے کہ ہم ہر حال میں بہتر نتائج حاصل کریں۔ٹیم اس طرح ہے :گولکیپر۔پی آر سریجیش (کپتان)، سورج کارکیرا۔دفاعی کھلاڑی : پردیپ مور، سریندر کمار، روپندرپال سنگھ، ھرمن پریت سنگھ، گروندر سنگھ۔ مڈفیلڈر۔چگلنسانا سنگھ کگجم، سمیت، سردار سنگھ، من پریت سنگھ (نائب کپتان)، ھرجیت سنگھ، من پریت۔فارورڈ۔ ایس وی سنیل، تلوندر سنگھ، مندیپ سنگھ، افہان یوسف، آکاش دیپ سنگھ۔

TOPPOPULARRECENT