Thursday , July 27 2017
Home / شہر کی خبریں / اراضی گھپلہ۔اے پی کے ایم ایل سی دیپک عدالتی تحویل میں

اراضی گھپلہ۔اے پی کے ایم ایل سی دیپک عدالتی تحویل میں

حیدرآباد 7جون (یواین آئی ) 165کروڑ روپئے مالیت کی اراضی پر نقلی دستاویزات کے ذریعہ قبضہ کرتے ہوئے ان کا غیرقانونی طریقہ سے رجسٹریشن کروانے کے معاملہ میں گزشتہ روز گرفتار آندھراپردیش قانون ساز کونسل کے رکن دیپک ریڈی کو جج نے 14دنوں کے لئے عدالتی تحویل میں دینے کی ہدایت دی۔ دیپک ریڈی حال ہی میں اے پی قانون ساز کونسل کے رکن بنائے گئے تھے اور وہ تلگودیشم کے سینئر لیڈر و رکن پارلیمنٹ جے سی دیواکر ریڈی کے داماد ہیں۔دیپک ریڈی کا شمار اے پی کے امیر ترین سیاستدانوں میں ہوتا ہے ۔بتایا جاتا ہے کہ وہ حیدرآباد میں کئی ایکڑ اراضی سے متعلق بعض غیر قانونی معاملات میں ملوث ہیں۔حیدرآباد کی بنجاراہلز علاقہ کی روڈ نمبر دو پر واقع 3.37کروڑروپئے مالیت کی اراضی کے دستاویزات میں بھی انہوں نے مبینہ طور پر اُلٹ پھیر کی ہے ۔ پولیس افسران اس معاملہ کی مختلف زاویوں سے جانچ کر رہے ہیں۔پولیس دیپک ریڈی اور گولڈ اسٹون پرساد کے درمیان تعلقات کے بارے میں بھی شواہد جمع کر رہی ہے ۔ گولڈ اسٹون پرساد ، میاں پور کی اراضی کے گھپلے کا ملزم ہے ۔اسی دوران دیپک ریڈی نے ان کے اس معاملہ میں ملوث ہونے کی تردید کی ۔انہوں نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہاکہ ان کی ضمانت پر رہائی کے بعد وہ تمام حقائق کو منظر عام پر لائیں گے ۔انہوں نے کہاکہ ان کی فرضی دستخط کی گئی ہے ۔اسی دوران بوجہ گٹہ کے رہنے والوں نے دیپک ریڈی کی اراضی گھپلے معاملہ میں گرفتاری پر جشن منایا ۔دیپک ریڈی پرالزام ہے کہ انہوں نے اپنے ایڈوکیٹ شیلندر سکسینہ کے ساتھ مل کر فرضی دستاویزات کے ذریعہ 300کروڑ روپئے کا اراضی گھپلہ کیا ہے ۔سی سی ایس پولیس کی جانب سے ان کی گرفتاری کے بعد بوجہ گٹہ کے رہنے والے مقامی افراد نے جشن منایا اور پٹاخے جلائے ۔ان افراد نے ایک دوسرے میں مٹھائیاں بھی تقسیم کی ۔انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ ان کی اراضی ان کو واپس دی جائے اور اس اراضی پر ان کے لئے ڈبل بیڈروم کے مکانات تعمیر کئے جائیں ۔ریونیو ڈپارٹمنٹ نے دیپک ریڈی کی اراضی کو سرکاری اراضی قرار دیا ہے ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT