Wednesday , August 16 2017
Home / ہندوستان / اردوکسی ایک فرقے کی نہیں، محبت کی ہے زبان

اردوکسی ایک فرقے کی نہیں، محبت کی ہے زبان

نئی دہلی 10 جولائی (سیاست ڈاٹ کام ) اردو لکھنے پڑھنے سے لوگوں کی دلچسپی بڑھ رہی ہے اور اس میں غیر مقیم ہندوستانی بھی پیش پیش ہیں۔امریکہ کی شکاگو یونیورسٹی سے ریاضی میں پی ایچ ڈی اور ایمیٹی یونیورسٹی میں استاد رہ چکے سنجے تیواری کو اردو زبان سے اتنا گہرا لگاؤ ہے کہ انہوں نے اپنے ہندستان میں قیام کے دوران اردو کا ایک سرٹیفکیٹ کورس تک کر ڈالا۔ 63سالہ تیواری ان 95 لوگوں میں شامل ہیں جنہوں نے اردو سیکھنے کے لئے ریختہ فاؤنڈیشن کے اردو سرٹیفکیٹ کورس سے استفادہ کیا۔اس کورس کے ذریعہ اردو سیکھنے والوں میں کئی وکیل، تاجر، استاد، ڈاکٹر اور خواتین خانہ شامل ہیں۔ان میں 90فیصد لوگ اکثریتی برادری سے ہیں جس سے یہ تاثر غلط ثابت ہو رہاہے کہ اردو کسی ایک فرقے کی زبان ہے ۔یہ لوگ اردو اور ہندی کو الگ الگ فرقوں کی زبانیں نہیں بلکہ سگی بہنیں مانتے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ اردو محبت کی زبان ہے اور وہ اپنے ملک میں اس محبت کو زندہ رکھنا چاہتے ہیں ۔اسے سیاست سے دور رکھنا چاہتے ہیں۔ اردو کی سب سے بڑی ویب سائٹ ’ریختہ‘ اپنے طور پر پہلی بار لوگوں کو اردو سکھانے کا کام کر رہی ہے ۔ سیکھنے والوں میں وکیل، تاجر، خواتین خانہ کے علاوہ نیورو سرجن اور شیف بھی شامل ہیں۔

TOPPOPULARRECENT