Saturday , August 19 2017
Home / اضلاع کی خبریں / اردو میڈیم سے ڈگری کورس میں داخلے پر پابندی غیر جمہوری اقدام

اردو میڈیم سے ڈگری کورس میں داخلے پر پابندی غیر جمہوری اقدام

انچارج تلگو دیشم حلقہ اسمبلی ظہیرآباد وائی نروتم کا صحافتی بیان

ظہیرآباد۔/19جولائی، ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) انچارج تلگودیشم حلقہ اسمبلی ظہیرآباد وائی نروتم نے اپنے ایک صحافتی بیان میں بی آر امبیڈکر اوپن یونیورسٹی کے تمام ڈگری کورسیس میں اردو میڈیم سے تعلیم حاصل کرنے والے طلباء و طالبات کے داخلے پر اچانک پابندی عائد کرنے پر اپنی گہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ یونیورسٹی کا یہ اقدام اردو طلباء و طالبات کے مستقبل کے ساتھ کھلواڑ کرنے کے مترادف ہے۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ 25 برسوں سے مستقر ظہیرآباد میں بی آر امبیڈکر اوپن یونیورسٹی سے ملحقہ مقامی ڈگری کالج میں اردو میڈیم ڈگری کورسیس چلائے جارہے تھے لیکن اس سال یونیورسٹی کے انتظامیہ کی جانب سے بلا اظہار وجوہ اچانک اردو میڈیم برخاست کرنے کے فیصلے سے مذکورہ ڈگری کالج میں زیر تعلیم 600 طلباء و طالبات کا مستقبل داؤ پر لگ گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ حلقہ اسمبلی ظہیرآباد میں اردو بولنے والوں کی آبادی قابل لحاظ تعداد میں ہے اور یہ کہ اردو میڈیم سے پرائمری سطح سے ڈگری سطح تک باقاعدہ طور پر تعلیم حاصل کرنے کا نظم ہے لیکن اوپن یونیورسٹی سے حصول تعلیم کا واحد ذریعہ بی آر امبیڈکر یونیورسٹی سے ملحقہ مقامی ڈگری کالج تھا۔ ایسے میں اس کالج سے بھی اردو میڈیم ڈگری کورسیس کے اچانک برخاست کردینے کے اقدام نے اردو میڈیم سے ڈگری کورسیس کرنے کے خواہشمند طلباء و طالبات کے ارادوں پر کاری ضرب لگادی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ریاست کی ٹی آر ایس زیر قیادت حکومت خود کو زبانی طور پر اردو نواز قرار دیتی ہے لیکن عملی طور پر وہ اردو کے ساتھ سوتیلانہ سلوک کرتی ہے۔ ریاست کی دوسری سرکاری زبان اردو ہونے کے باوجود اسے آج تک اس کا مستحقہ مقام نہیں ملا ہے۔ جس طرح ریاست کے سرکاری محکمہ جات میں پہلی سرکاری زبان تلگو کا چلن ہے ، اس طرح دوسری سرکاری زبان اردو کا چلن کیوں نہیں ہے۔کیوں سرکاری محکمہ جات کے سائن بورڈز پر حتیٰ کہ آر ٹی سی کی بسوں کی تختیوں پر بھی اردو میں اندراج نہیں کیا گیا ہے۔ انہوں نے واضح طور پر کہا کہ بی آر امبیڈکر اوپن یونیورسٹی میں اردو میڈیم سے ڈگری کورسیس کرنے والے طلباء و طالبات پر داخلے پر پابندی عائد کرنا غیر جمہوری اقدام ہے جس کی جتنی مذمت کی جائے کم ہے۔ انہوں نے مذکورہ یونیورسٹی کے انتظامیہ سے اس غیر جمہوری فیصلے سے دستبرداری اختیار کرنے کا پرزور مطالبہ کیا ہے۔ ساتھ ہی ساتھ ریاستی حکومت سے یہ بھی مطالبہ کیا گیا ہے کہ وہ اس ضمن میں ٹھوس اقدامات کرے تاکہ ہزاروں طلباء و طالبات کا مستقبل تاریک ہونے سے بچ جائے۔

ڈاکٹرگیتا ریڈی کی جانب سے
اظہار تعزیت
کوہیر۔/19جولائی، ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) ڈاکٹر جے گیتا ریڈی رکن اسمبلی ظہیرآباد پی ایس سی چیرمین نے اپنے ایک تعزیتی بیان میں بتایا کہ جناب عابد علی خاں مرحوم روز نامہ سیاست کے بانی کی اہلیہ کے انتقال پر گہرے دکھ کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ میری والدہ کے زمانہ سے ان کے گھرانہ سے بہت اچھے تعلقات ہیں، میں بڑے افسوس میں ہوں کہ ان کے دکھ کے وقت حیدرآباد میں نہیں رہ سکی لیکن جناب زاہد علی خاں ایڈیٹر روز نامہ سیاست ، جناب ظہیر الدین علی خاں منیجنگ ایڈیٹر ، جناب عامر علی خان نیوز ایڈیٹر کے غم میں برابر کی شریک ہوں۔

 

TOPPOPULARRECENT