Thursday , August 17 2017
Home / ہندوستان / اردو میں نیٹ کے انعقاد پر مرکز کا کھلا ذہن

اردو میں نیٹ کے انعقاد پر مرکز کا کھلا ذہن

نئی دہلی 10 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) مرکز نے آج سپریم کورٹ کو بتایا کہ وہ نیٹ کے آئندہ تعلیمی سال سے اُردو میڈیم میں بھی انعقاد کی تجویز پر کھلا ذہن رکھتے ہیں جو ایم بی بی ایس اور بی ڈی ایس کورسیس کے لئے داخلوں کے سلسلہ میں واحد انٹرنس ٹسٹ ہے۔ تاہم سالیسٹر جنرل رنجیت کمار نے مرکزی حکومت کی طرف سے جسٹس کورین جوزف اور جسٹس آر بانومتی پر مشتمل بنچ کو بتایا کہ موجودہ تعلیمی سال سے قابل عمل نہیں کہ اردو کو نیشنل الیجبلیٹی کم انٹرنس ٹسٹ (NEET) کے لئے ایک میڈیم کے طور پر متعارف کیا جائے۔ بنچ نے مرکز اور دیگر فریقوں بشمول میڈیکل کونسل آف انڈیا، ڈینٹل کونسل آف انڈیا، سنٹرل بورڈ آف سکنڈری ایجوکیشن (سی بی ایس ای) کو 22 مارچ تک وقت دیا کہ اِس کیس میں اپنے جواب داخل کریں۔ اسٹوڈنٹ اسلامک آرگنائزیشن (ایس آئی او) نے نیٹ 2017 کے لئے اردو کو بطور میڈیم متعارف کرانے کی استدعا کے ساتھ عرضی داخل کر رکھی ہے جس پر مزید سماعت بنچ نے 26 مارچ کو مقرر کردی۔ موجودہ طور پر نیٹ 10 زبانوں ہندی، انگریزی، گجراتی، مراٹھی، اڑیہ، بنگالی، آسامی، تلگو، ٹامل اور کنڑا میں منعقد کیا جارہا ہے۔

 

طالب علم کے پاس سے
جعلی کرنسی ضبط
باریپاڑہ (اوڈیشہ) ، 10 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) ایک کالج اسٹوڈنٹ جس کے پاس جعلی کرنسی نوٹ تھے اور وہ انھیں چلن میں لانے کی کوشش کررہا تھا، اسے ضلع میوربھنج سے گرفتار کرلیا گیا ہے، پولیس نے آج یہ بات کہی۔ پولیس نے ایک اطلاع پر کارروائی کرتے ہوئے ملزم کو گرفتار کیا جو باریپاڑہ کالج کا طالب علم ہے۔ پولیس نے اس کے قبضہ سے 500 روپئے کے 21 جعلی نوٹ برآمد کئے۔ملزم نے پولیس کو بتایا کہ اسے یہ جعلی نوٹ ایک دوست سے ملے جو بھوبنیشور میں پتیا کا ساکن ہے۔

TOPPOPULARRECENT