Sunday , August 20 2017
Home / شہر کی خبریں / اردو کی ترقی کیلئے اردو ایکسپو جیسے پروگرام نہایت معاون

اردو کی ترقی کیلئے اردو ایکسپو جیسے پروگرام نہایت معاون

نئی نسل سے اردو سننے کے بعد اردو پڑھانے لکھانے کی جدت کا احساس، جناب زاہدعلی خاں اور عامر علی خاں کا خطاب

حیدرآباد 24 نومبر (سیاست نیوز) اردو زبان کی ترقی مادری زبان کے نئی نسل کو اس زبان سے واقف کروانے میںہے جو قوم اپنی زبان کی تاریخ سے واقف نہیں رہتی اس زبان کے ارتقا کے مواقع کم ہوجاتے ہیں۔ اردو ایکسپو ’اردو ہے جس کا نام‘ سے موسوم جاری نمائش اردو کا مشاہدہ کرتے ہوئے جناب زاہد علی خاں ایڈیٹر سیاست اور نیوز ایڈیٹر جناب عامر علی خان نے کیا اور کہاکہ مادری زبان اردو کے بچے جس انداز سے اپنے احساسات اور خیالات کا اظہار اچھی طرح کرسکتے ہیں اور دوسری زبان میں نہیں کرسکتے۔ احاطہ سیاست کے محبوب حسین جگر ہال عابڈس میں سنٹرل پبلک ہائی اسکول کے زیراہتمام ادارہ سیاست کے اشتراک سے جاری اردو ایکسپو میں آج دوسرے دن محبان اردو کی کثیر تعداد نے شرکت کرکے مشاہدہ کیا۔ آغاز سے ہی اردو والے امڈ پڑے نہ صرف محبان اردو بلکہ کئی اسکولس کے ذمہ داران نے اپنے اسکولی طلبہ کے ساتھ اس میں شرکت کی۔ اور کتاب الرائے میں اظہار کیا۔ جناب احمد اللہ قریشی پرنسپل گورنمنٹ جونیر کالج ریٹائرڈنے اپنے تاثرات قلمبند کرتے ہوئے بتایا کہ یہاں اردو جیتی جاگتی شخصیت کا روپ اختیار کرکے ہر آنے والے کا استقبال کرتی ہے اور اس سے ہم کلام نظر آتی ہے۔ مختلف شعرا کی تمثیل مسحور کن ہے۔ مجھے یقین ہے کہ مستقبل میں ام للسان ہوگی۔ اس نمائش کا مشاہدہ کرتے ہوئے ہر کوئی اردو سے نئی نسل کو اپنے بچوں کو اردو سے واقف کروانا چاہے گا اور یہ ناگزیر ہوگیا ہے۔ اردو ایک زندہ زبان ہے۔ اس میں ترقی کرنے کی پوری صلاحیتیں موجود ہیں جن اسکولس نے اس کا مشاہدہ کیا ان میں میریڈین اسکول بنجارہ ہلز، وی آئی پی انٹرنیشنل اسکول، اکزامنر نیشنل اسکول، ماسٹر مائینڈس ہائی اسکول وٹے پلی، بوسٹن مشن ہائی اسکول، درشہوار اسکول، شاداں بی ایڈ کالج کی طالبات کے علاوہ کئی اردو تنظیموں کے سربراہان، سرکردہ شخصیات جن میں جناب ذکر الدین، میراں محی الدین، جاوید احمد، وقار احمدخالد، شاکر احمد (بوسٹن اسکول)، محمد مفید، محمد مستان، سکندر معشوقی ٹی آر ایس قائد، عبدالستار مجاہد، تمیزالدین احمد صدر اسوسی ایشن آف اردو ڈیولپمنٹ، عارف الدین احمد، خیرالدین بیگ جانی، منور علی مختصر، شبیر خان، عثمان الہاجری، علی الگتمی، احمد بشیرالدین فاروقی، نعیم اللہ شریف، محبوب حسین آزاد، ایم ایم احمد، حسین عابدی ہاشم ذاکر، نوید اختر خان، محمد نعیم، لطیف الدین لطیف، صبیحہ نسرین کے علاوہ جناب جلیل ازہر نامہ نگار نرمل نے طلبہ کے مظاہرہ کی ستائش کی۔ جناب ظفراللہ فہیم ڈائرکٹر سنٹرل پبلک ہائی اسکول اور ان کے اساتذہ حمیدہ بیگم کی شبانہ روز کاوشوں اور اس قسم کی منفرد اور مثالی نمائش کے اہتمام پر مبارکباد دی۔ جناب زاہد علی خاں ایڈیٹر سیاست نے اس نمائش کی دو دن توسیع کا اعلان کیا اور یہ نمائش 25 نومبر اور 26 نومبر دن میں ایک بجے تا 6 بجے جاری رہے گی۔ ایم اے حمید پروگرام کوآرڈی نیٹر نے سنٹرل اسکول کے تمام طلبہ جو اس میں حصہ لئے ان کی حوصلہ افزائی کرتے ہوئے اس کو مزید وسعت دینے اور مختلف مقامات پر عظیم پیمانے پر منعقد کرنے کی تجاویز رکھی۔ جناب عامر علی خان نیوز ایڈیٹر سیاست نے اعلان کیاکہ وہ ماہ ڈسمبر میں اس کا وسیع پیمانے پر انعقاد ہوگا۔

TOPPOPULARRECENT