Tuesday , October 24 2017
Home / شہر کی خبریں / اردو یونیورسٹی کے اسکامس کے خاطیوں کو کلین چٹ دینے کے طریقہ کی تلاش

اردو یونیورسٹی کے اسکامس کے خاطیوں کو کلین چٹ دینے کے طریقہ کی تلاش

کروڑہا روپیوں کے اسکام منظر عام پر ، موجودہ وائس چانسلر کارروائی کرنے سے گریز ، یونیورسٹی پھر ایکبار دھاندلیوں کے مرکز میں تبدیل
حیدرآباد۔/12 مئی، ( سیاست نیوز) مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی میں وائی فائی اور وائی میکس کے آغاز اور منی پال میں فاصلاتی تعلیم کے نصابی کتب کی اشاعت سے متعلق کروڑہا روپئے کے اسکام کے منظر عام پر آنے کے باوجود وائس چانسلر خاطیوں کے خلاف کارروائی سے گریز کررہے ہیں۔ پروفیسر سلیمان صدیقی کی صدارت میں قائم کردہ 3 رکنی تحقیقاتی کمیٹی نے دونوں اسکامس کے سلسلہ میں اپنی تفصیلی رپورٹ ایک ماہ قبل وائس چانسلر کو پیش کردی لیکن آج تک اس رپورٹ پر کوئی کارروائی نہیں کی گئی۔ اطلاعات کے مطابق دونوں اسکامس کے وقت موجود سابق وائس چانسلرس اور اس میں ملوث دیگر افراد کا موجودہ وائس چانسلر پر زبردست دباؤ ہے اور وہ ملوث افراد کے خلاف کارروائی نہیں کرسکتے۔ یونیورسٹی کے ذرائع نے بتایا کہ موجودہ وائس چانسلر چونکہ سابقہ وائس چانسلرس کے قریبی رہ چکے ہیں اور جونیر ہیں لہذا وہ تحقیقاتی رپورٹ کو نظر انداز کرتے ہوئے دونوں اسکامس کے خاطیوں کو کلین چٹ دینے کا طریقہ تلاش کررہے ہیں۔  وائی فائی اور وائی میکس کے اسکام میں اس قدر کھلے عام کروڑہا روپئے کا غبن کیا گیا کہ جس کی سابق میں کوئی نظیر نہیں ملتی۔ عثمانیہ یونیورسٹی جو 1300 ایکر اراضی پر محیط ہے وہاں 2007ء میں وائی فائی کی سہولت حاصل کی گئی جس پر صرف ڈھائی کروڑ روپئے کا خرچ آیا لیکن صرف 150ایکر پر محیط اردو یونیورسٹی نے وائی فائی کیلئے 8کروڑ روپئے یکمشت ادا کردیئے۔ اسکامس میں ملوث بعض افراد ابھی بھی یونیورسٹی میں اہم عہدوں پر فائز ہیں اور ایک شخص کو دوبارہ اُسی عہدہ پر فائز کردیا گیا جس عہدہ پر فائز رہنے کے دوران کروڑہا روپئے کا نصابی کتب اشاعت کا اسکام ہوا تھا۔ یہ افراد دہلی میں اپنا کافی اثر و رسوخ رکھتے ہیں اور وہ وائس چانسلر پر مختلف گوشوں سے دباؤ بنارہے ہیں۔

اطلاعات کے مطابق یونیورسٹی کے چانسلر ظفر سریش والا کو جب اس اسکام کے بارے میں پتہ چلا تو انہوں نے تحقیقاتی رپورٹ کے مطابق کارروائی کی تائید کی۔ موجودہ وائس چانسلر نے اپنی دیانتداری ثابت کرنے کیلئے عہدہ کا جائزہ حاصل کرتے ہی کئی معاملات میں جانچ کا فیصلہ کیا لیکن دو بڑے اسکامس منظر عام پر آتے ہی دیگر معاملات کی جانچ از خود سرد پڑ جائیگی۔ انہوں نے یونیورسٹی کے تمام ٹیچنگ اور نان ٹیچنگ اسٹاف کے تقررات سے متعلق دستاویزات پیش کرنے کی ہدایت دی تھی اور اس سلسلہ میں ایک کمیٹی تشکیل دی گئی۔ بتایا جاتا ہے کہ قواعد کے خلاف تقرر حاصل کرنے والے اور قابلیت اور اہلیت کے بغیر پروفیسر کے عہدہ پر ترقی حاصل کرنے والوں کی خاصی تعداد ہے جو مشترکہ طور پر تحقیقات پر اثرانداز ہونے کی کوشش کررہے ہیں۔ یونیورسٹی میں قائم کردہ جوائنٹ ایکشن کمیٹی نے کئی ایسے افراد کی نشاندہی کی تھی جن کا تقرر قواعد کے خلاف کیا گیا۔ پی ایچ ڈی کی تکمیل حتیٰ کہ پی ایچ ڈی میں داخلہ کے بغیر ہی بعض افراد کو اسسٹنٹ اور اسوسی ایٹ پروفیسر کے عہدوں پر ترقی دے دی گئی۔ وائس چانسلر نے یونیورسٹی میں موجود غیر اردو داں پروفیسرس کو اردو سکھانے کا اعلان کیا تھا لیکن شاید ہی اس پر عمل آوری ہوسکے۔ الغرض یونیورسٹی پھر ایک بار دھاندلیوں اور بے قاعدگیوں کا مرکز بن چکی ہے۔ حال ہی میں ایک سنٹر کے ڈائرکٹر کو بیجا الزامات کے تحت خدمات سے برطرف کردیا گیا حالانکہ الزامات ثابت نہیں ہوسکے۔ اس معاملہ میں مذکورہ ڈائرکٹر کی غلطی صرف یہ تھی کہ انہوں نے یونیورسٹی میں جاری بے قاعدگیوں کے خلاف آواز اٹھائی تھی۔ سابق وائس چانسلر اور ان کے بعض حواریوں نے منصوبہ بند انداز میں ڈائرکٹر کو نشانہ بنایا۔اس سازش میں کئی اہم عہدوں پر فائز افراد اور ایک ایسا شخص بھی شامل بتایا جاتا ہے جو اہلیت کے بغیر تقرر حاصل کرچکا ہے اور ان دنوں بتایا جاتا ہے کہ وائس چانسلر اور دیگر اہم عہدوں پر فائز افراد کا آلۂ کار بن چکا ہے۔

TOPPOPULARRECENT