Thursday , August 24 2017
Home / شہر کی خبریں / اردو یونیورسٹی کے بے قاعدگیوں میں ملوث افراد کو بخشا نہیں جائے گا

اردو یونیورسٹی کے بے قاعدگیوں میں ملوث افراد کو بخشا نہیں جائے گا

مستقبل میں اسکامس کو روکنے سخت اقدامات ، ظفر سریش والا کی پریس کانفرنس
حیدرآباد ۔ /26 اکٹوبر (سیاست نیوز) چانسلر اردو یونیورسٹی ظفر سریش والا نے بے قاعدگیوں میں ملوث افراد کے خلاف سخت کارروائی کا تیقن دیتے ہوئے واضح کیا کہ وہ آئندہ کسی اسکام کو روکنے کیلئے وائس چانسلر کی مدد سے سخت گیر اقدامات کریں گے ۔ انہوں نے کہا کہ اب تک جو بھی اسکام منظر عام پر آئے ہیں ان کی جانچ کرتے ہوئے خاطیوں کے خلاف کارروائی کی جائے گی ۔ میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے ظفر سریش والا نے کہا کہ وائی فائی کی تنصیب اور نصابی کتب کی اشاعت کے سلسلے میں منظر عام پر آنے والے اسکام کی وہ معلومات حاصل کریں گے ۔ انہیں بتایا گیا کہ ماہرین پر مشتمل کمیٹی نے اس سلسلے میں 6 ماہ قبل اپنی تحقیقات رپورٹ پیش کردی ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ وہ تحقیقاتی رپورٹ کے بارے میں تفصیلات حاصل کرتے ہوئے کارروائی کریں گے ۔ انہوں نے بعض گوشوں کی جانب سے پھیلائی جارہی ان اطلاعات کو مضحکہ خیز قرار دیا کہ چانسلر کو کوئی اختیارات حاصل نہیں ہوتے ۔ انہوں نے کہا کہ اختیارات بھلے ہی نہ ہو لیکن استعمال کا طریقہ ہونا چاہئیے ۔ اگر انسان میں صلاحیت ہو تو وہ اپنے اختیارات کا استعمال کرسکتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ وہ ایک مشن کے ساتھ یونیورسٹی کے چانسلر کی حیثیت سے وابستہ ہوئے ہیں اور وہ اپنی کارکردگی میں کوئی مفاہمت نہیں کرسکتے ۔ انہوں نے کہا کہ مستقبل میں کسی بھی معاملے میں بے قاعدگی یا اسکام کی ہرگز اجازت نہیں دی جائے گی ۔

 

انہوں نے تیقن دیا کہ یونیورسٹی کے ایک  سابق اسوسی ایٹ پروفیسر کے خلاف کی گئی کارروائی کا وہ شخصی طور پر جائزہ لیں گے اور ان کے ساتھ مکمل انصاف کیا جائے گا ۔ انہوں نے بتایا کہ یونیورسٹی میں موجود غیراردو داں پروفیسرس کو ہدایت دی گئی ہے کہ وہ طلباء کو اردو زبان میں میٹرئیل فراہم کریں ۔ انہوں نے بتایا کہ وائس چانسلر کی جانب سے ہر مہینہ اردو میں نصابی کتب کی تیاری کا جائزہ لیا جارہا ہے ۔ یونیورسٹی کے وائس چانسلر ڈاکٹر اسلم پرویز نے صحافیوں سے علحدہ ملاقات میں یونیورسٹی کی کارکردگی بہتر بنانے کی حکمت عملی اور اس کے نتائج سے واقف کروایا ۔ انہوں نے بتایا کہ وائی فائی اور کتابوں کی پرنٹنگ سے متعلق تحقیقاتی رپورٹ اگرچہ یونیورسٹی کو حاصل ہوچکی ہے تاہم ابھی یہ تحقیقات نامکمل ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کوئی بھی اسکام ہو خاطیوں کو بخشا نہیں جائے گا ۔ انہوں نے بتایا کہ وائس چانسلر کی ذمہ داری سنبھالنے کے بعد سے یونیورسٹی میں ایک بھی قدم ایسا نہیں اٹھایا گیا جو قواعد کے برخلاف یا پھر یونیورسٹی کے مفادات کے خلاف تصور کیا جائے ۔ وہ پوری دیانتدار کے ساتھ یونیورسٹی میں تعلیمی ماحول پیدا کرنے اور زیادہ سے زیادہ طلباء کے مستقبل کو تابناک بنانے کی مساعی کررہے ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT