Friday , October 20 2017
Home / ہندوستان / اروناچل پردیش کا سیاسی تنازعہ سپریم کورٹ کی دستوری بنچ سے رجوع

اروناچل پردیش کا سیاسی تنازعہ سپریم کورٹ کی دستوری بنچ سے رجوع

نئی دہلی۔/14جنوری، ( سیاست ڈاٹ کام ) سپریم کورٹ نے آج ارونا چل پردیش میں جاریہ سیاسی تعطل پر گوہاٹی ہائیکورٹ کے جاری کردہ احکامات کے خلاف پیش کردہ متفرق درخواستوں کو یکجا کرکے دستوری بنچ سے رجوع کردیا ہے۔ جسٹس جے ایس کیھہر اور جسٹس سی ناگپان پر مشتمل بنچ نے کہا کہ گورنر، اسپیکر اور ڈپٹی اسپیکر کے اختیارات کا معاملہ دستور کے تابع ہوتا ہے لہذا اس مسئلہ پر دستوری بنچ کو قطعی فیصلہ کرنے کی ضرورت ہے۔ سپریم کورٹ میں مسٹر مبنم ربیا کی نمائندہ وکیل نے جنہیں کانگریس کے 14باغی اور بی جے پی کے ارکان اسمبلی نے اسپیکر کے عہدہ سے ہٹایا ہے بتایا کہ گورنر نے اس تجویز سے اتفاق کرلیا ہے کہ سیاسی تعطل پر عدالت العالیہ سے رہنمائی حاصل کی جائے۔ قبل ازیں سینئر وکلاء کی ٹیم ایف ایس نریمان، کپل سبل اور ہریش سالوے جو کہ مختلف سیاسی جماعتوں کی نمائندگی کررہے ہیں چیف جسٹس ٹی ایس ٹھاکر کے چیمبر پہنچے اور بتایا کہ ارونا چل پردیش کا مسئلہ انتہائی حساس ہے جس پر عاجلانہ فیصلہ کیلئے ایک وسیع بنچ قائم کرنے کی ضرورت ہے جس پر چیف جسٹس آف انڈیا نے جلد از جلد فیصلہ کا تیقن دیا۔

TOPPOPULARRECENT