Tuesday , August 22 2017
Home / ہندوستان / اروناچل پردیش کے کئی مقامات کے چینی نام

اروناچل پردیش کے کئی مقامات کے چینی نام

حکومت ہند کا شدید احتجاج، نام گھڑ لینے سے موقف تبدیل نہیں ہوتا
نئی دہلی 20 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) ہندوستان نے اروناچل پردیش کے بعض حصوں کا چینی نام تجویز کرنے پر چین کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا اور کہاکہ پڑوس کے شہروں کا اپنی طرف سے نام رکھ لینے کی بناء غیر قانونی علاقہ قانونی نہیں ہوجاتا۔ وزارت اُمور خارجہ کے ترجمان گوپال واگلے نے کہاکہ اروناچل پردیش ہندوستان کا اٹوٹ حصہ ہے۔ اگر آپ اپنے پڑوس کے ٹاؤنس کا اختراعی نام گھڑ لیتے ہیں تو اِس سے علاقہ پر غیرقانونی دعویٰ قانونی نہیں ہوجاتا۔ جب اُن سے پوچھا گیا کہ کیا ہندوستان نے اِس معاملہ کو چین سے رجوع کیا ہے، اُنھوں نے کہاکہ حکومت چین نے اب تک سرکاری طور پر کسی طرح کا رابطہ قائم نہیں کیا۔ چین نے کل اعلان کیا تھا کہ اُس نے شمال مشرقی ریاست میں 6 مقامات کے سرکاری ناموں کی توثیق کردی ہے اور اِسے ایک قانونی کارروائی قرار دیا تھا۔ حکومت چین نے یہ اقدام ایسے وقت کیا جبکہ بیجنگ نے دلائی لاما کے حالیہ سرحدی ریاست کے دورے پر ہندوستان کے ساتھ شدید احتجاج کیا تھا۔ جب اُن سے پوچھا گیا کہ چین کی جانب سے آئندہ ماہ منعقد ہونے والے چوٹی اجلاس ’’ایک پٹی ایک سڑک‘‘ میں کیا ہندوستان شرکت کرے گا، اُنھوں نے کہاکہ ہمیں دعوت نامہ موصول ہوا ہے اور اُس پر غور کیا جارہا ہے۔

TOPPOPULARRECENT