Wednesday , June 28 2017
Home / Top Stories / اروند کجریوال نے دو کروڑ روپئے رشوت لی

اروند کجریوال نے دو کروڑ روپئے رشوت لی

دہلی کے برطرف وزیر کپل مشرا کا الزام، منیش سیسوڈیا کی تردید
نئی دہلی۔7 مئی (سیاست ڈاٹ کام) دہلی کے برطرف وزیر کپل مشرا نے چیف منسٹر اروند کجریوال پر اپنے کابینی رفیق سے دو کروڑ روپئے رشوت لینے کا الزام عائد کیا۔ ڈپٹی چیف منسٹر منیش سیسوڈیا نے اس الزام کی تردید کی۔ کپل مشرا کو کل رات کابینہ سے برطرف کردیا گیا۔ دہلی بلدی انتخابات میں شکست کے بعد عام آدمی پارٹی میں بڑے پیمانے پر تبدیلیاں رونما ہورہی ہیں۔ مشرا کو کل رات حیرت انگیز طور پر وزارت عہدے سے برطرف کیا گیا جبکہ انہوں نے سینئر پارٹی لیڈر کمار وشواس کی تائید کی تھی۔ انہوں نے لیفٹننٹ گورنر انیل بائجل کو کجریوال حکومت میں گزشتہ دو سال کے دوران ہونے والی مختلف بے قاعدگیوں سے واقف کرایا ہے۔ مشرا نے راج گھاٹ پر گاندھی جی کو خراج پیش کرنے کے بعد میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ میں نے اپنی آنکھوں سے ستیندر جین کو دو کروڑ روپئے کی رقم اروند کجریوال کو ان کے مکان پر دیتے ہوئے دیکھا ہے۔ جب میں نے کجریوال سے پوچھا تو انہوں نے کہا کہ سیاست میں یہ سب چلتا ہے اور وہ تفصیلات کے بارے میں بعد میں بتائیں گے۔ انہوں نے یہ بھی الزام عائد کیا کہ ستیندر جین جو عاپ حکومت میں وزیر صحت و پی ڈبلیو ڈی ہیں، شخصی طور پر انہیں بتایا کہ انہوں نے کجریوال کے رشتہ دار کی اراضی کی معاملات کی یکسوئی کردی ہے۔ جین نے ان سے کہا کہ 50 کروڑ روپئے مالیتی اراضی معاملت کی انہوں نے یکسوئی کی۔ جب میں نے کجریوال کو یہ بات بتائی تو انہوں نے کہا کہ یہ سب جھوٹ ہے اور وہ مجھ پر بھروسہ رکھیں۔ ڈپٹی چیف منسٹر منیش سیسوڈیا نے کہا کہ مشرا کے عائد کردہ کرپشن کے الزامات بالکلیہ بے بنیاد ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مشرا کو بحیثیت وزار ناقص کارکردگی کی بناء برطرف کیا گیا تو وہ اس طرح کے الزامات عائد کررہے ہیں۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT