Saturday , August 19 2017
Home / سیاسیات / ارون جیٹلی ‘ کماری شیلجا سے متعلق ریمارکس سے دستبردار

ارون جیٹلی ‘ کماری شیلجا سے متعلق ریمارکس سے دستبردار

پیوش گوئل نے بھی معذرت خواہی کرلی ۔ صدر نشین کی مداخلت سے حکومت ۔ اپوزیشن تعطل ختم
نئی دہلی 3 ڈسمبر ( سیاست ڈاٹ کام ) حکومت اور اپوزیشن کے مابین راجیہ سبھا میں آج تصادم ختم ہوگیا ۔ یہ تصادم کانگریس لیڈر کماری شیلجا کی جانب سے گجرات کی ایک مندر میں ان کے داخلہ کے تعلق سے ریمارک پر پیدا ہوا تھا ۔ وزیر فینانس ارون جیٹلی نے اس تعلق سے اپنے ریمارکس سے دستبرداری اختیار کرلی جبکہ ان کے کابینی ساتھی پیوش گوئل نے معذرت خواہی کرلی ۔ اس مسئلہ پر کل سے ایوان میں کارروائی متاثر ہو رہی تھی ۔ یہ تعطل ایوان کے باہر بات چیت کے ذریعہ حل کرلیا گیا ۔ اس میں مختلف جماعتوں کے قائدین نے شرکت کی ۔ بات چیت کا اہتمام راجیہ سبھا کے صدر نشین حامد انصاری اور نائب صدر نشین پی جے کورئین نے کیا تھا ۔ ظہرانہ کے بعد جب ایوان کی کارروائی کا کئی بار کے التوا کے بعد دوبارہ آغاز ہوا قائد ایوان ارون جیٹلی نے صدر نشین اور نائب صدر نشین کا اپوزیشن جماعتوں کے قائدین کے ساتھ اجلاس طلب کرنے پر شکریہ ادا کیا ۔ ارون جیٹلی نے کہا کہ کماری شیلجا کے اس بیان کے بعد انہوں نے پیر کو اپنی تقریر کے دوران اصل دوارکا مندر کا کوئی حوالہ نہیں دیا تھا اور کل انہوں نے اس بیان سے دستبرداری بھی اختیار کرلی تھی ایسے میں میں ( جیٹلی ) نے کل جو مسئلہ اٹھایا تھا اب اس کا کوئی جواز نہیں ہے اور وہ ختم ہوگیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اس مسئلہ پر مباحث کے دوران جو ریمارکس یا تبصرے کئے گئے ہیں وہ اس پر فیصلہ کرسی صدارت پر چھوڑتے ہیں اور ان کے ساتھی وزیر نے جو کچھ بھی کہا تھا اس پر افسوس کا اظہار کیا ہے ۔ قبل ازیں وزیر کوئلہ و توانائی پیوش گوئل نے اپنے ریمارکس پر معذرت خواہی کی تھی تاہم کانگریس لیڈر کماری شیلجا نے اسے قبول کرنے سے انکار کیا تھا ۔ ایوان میں اپوزیشن جماعتیں مسٹر گوئل کو ان کے ریمارکس کی وجہ سے مسلسل تنقیدوں کا نشانہ بنا رہی تھیں۔ اس مسئلہ پر ایوان کی کارروائی میں کل سے خلل پیدا ہورہا تھا تاہم آج صدر نشین راجیہ سبھا اور نائب صدر نشین کی مداخلت سے اس تعطل کو ختم کرنے میں کامیابی حاصل ہوئی ۔

TOPPOPULARRECENT