Saturday , May 27 2017
Home / Top Stories / اسامہ کے فرزند حمزہ ‘ اپنے والد کی موت کا انتقام لینے بے چین

اسامہ کے فرزند حمزہ ‘ اپنے والد کی موت کا انتقام لینے بے چین

28 سالہ نوجوان کو مرحوم والد سے بے پناہ محبت ‘ سابق ایف بی آئی ایجنٹ علی صوفان کا انٹرویو ‘ شخصی خطوط سے واقفیت کی بنیاد پر دعوی

واشنگٹن 13 مئی ( سیاست ڈاٹ کام ) اسا مہ بن لادن کے فرزند حمزہ ایک وسیع اور مزید طاقتور القاعدہ کی قیادت کرنے پر تول رہے ہیں اور وہ اپنے والد کی موت کا انتقال لینے پر تلے ہوئے ہیں۔ سابق ایف بی آئی ایجنٹ نے یہ اطلاع دی جو پاکستان کے ایبٹ آباد میں القاعدہ لیڈر کو ہلاک کرنے کی گئی کارروائی کے وقت ضبط کئے گئے شخصی مکتوبات سے واقفیت رکھتے ہیں۔ حمزہ اب 28 سال کے ہوگئے ہیں اور وہ اسامہ کی موت کے وقت 22 برس کے تھے ۔ انہوں نے یہ مکتوبات تحریر کئے تھے اور انہوں نے کئی برسوں سے اپنے والد سے ملاقات نہیں کی تھی ۔ سابق ایف بی آئی ایجنٹ علی صوفان نے یہ بات بتائی ۔ انہوں نے سی بی ایس نیوز سے کہا کہ ان مکتوبات سے پتہ چلتا ہے کہ حمزہ ایک نوجوان شخص ہے جو اپنے والد کو بیحد پسند کرتا ہے اور ان کے نظریات کو آگے بڑھانا چاہتا ہے ۔ علی صوفان ایف بی آئی کی جانب سے ورلڈ ٹریڈ سنٹر پر حملہ کے بعد القاعدہ کے خلاف شروع کی گئی تحقیقات کا حصہ تھے اور اس وقت انہوں نے اہم ذمہ اریاں نبھائی تھیں۔ یہ مکتوبات اس وقت ضبط کئے گئے تھے جب امریکہ کی جانب سے ہیلی کاپٹرس کے ذریعہ کارروائی کرتے ہوئے پاکستان کے شہر ایبٹ آباد میں اسامہ بن لادن کو ہلاک کردیا گیا تھا ۔ ایبٹ آباد پاکستان کے دارالحکومت اسلام آباد کے شمال میں ہے ۔ ان مکتوبات کو اب سامنے لایا جا رہا ہے ۔ کہا گیا ہے کہ صرف چند امریکی فوجی اور دوسرے سینئر عہدیدار اس وقت امریکی صدر بارک اوباما کے ساتھ اس حملہ سے واقف تھے

اور اس کی تیاریاں کئی مہینوں سے کی جا رہی تھیں ۔ سی بی ایس نیوز کے 60 Minutes پروگرام کی ایک نشریات کیلئے بات کرتے ہوئے صوفان نے کہا کہ حمزہ کے مکتوبات میں سے ایک میں وہ اپنے والد سے مخاطب ہوتے ہوئے کہتا ہے کہ اسے ہر وہ مسکراہٹ ‘ ہر وہ نظارہ یاد ہے جو اس کے والد نے اسے دیا تھا اور ہر وہ بات یاد ہے جو اسامہ نے اس سے کہی تھی ۔ حمزہ نے مزید تحریر کیا ہے کہ وہ خود کو فولاد کا بنا ہوا پاتے ہیںاور اللہ کیلئے جہاد کا راستہ وہی راستہ ہے جس کیلئے ہم زندہ رہتے ہیں۔ صوفان نے کہا کہ حمزہ کی قائدانہ صلاحیتوں کا کئی سال قبل اس وقت پتہ چلنا شروع ہوگیا تھا جب وہ ابھی لڑکپن میں تھا ۔ اسے پروپگنڈہ ویڈیوز میں بھی دکھایا گیا تھا اور بعض میں اس کے ہاتھ میں بندوق بھی بتائی گئی تھی ۔ حمزہد القاعدہ اور القاعدہ کے ارکان کیلئے پوسٹر بوائے تھا اور جو لوگ پروپگنڈہ ویڈیوز سے متاثر ہوئے ہیں وہ ان کیلئے بہت اہمیت رکھتا ہے ۔ جاریہ سال جنوری میں امریکہ نے حمزہ کو خصوصی طور پر نامزد کردہ عالمی دہشت گرد قرار دیا ہے ۔ اسامہ بن لادن کو بھی ایسا ہی دہشت گرد قرار دیا گیا تھا ۔ صوفان نے کہا کہ وہ اپنے والد کی طرح ہی بات کرتا ہے ۔ حال ہی میں اس کا ایک پیام منظر عام پر آیا تھا ۔ اس نے ایک تقریر کی تھی جو اسی طرح کی تھی جیسی اسامہ کی ہوا کرتی تھی ۔ اس نے وہی جملے ‘ وہی اصطلاحات وغیرہ استعمال کی تھیں جو اسامہ بن لادن استعمال کرتا تھا ۔ گذشتہ دو سال میں حمزہ نے چار آڈیو پیامات ریکارڈ کروائے ہیں۔ صوفان نے کہا کہ حمزہ کا کہنا تھا کہ ’’ امریکی لوگ ‘ ہم آ رہے ہیں اور تم کو اس کا احساس ہوگا ۔ تم نے میرے والد ‘ عراق اور افغانستان کے ساتھ جو کچھ کیا تھا ہم اس کا بدلہ لینے آ رہے ہیں۔ ساری بات انتقام کی ہی ہے ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT