Saturday , March 25 2017
Home / شہر کی خبریں / استثنی کے باوجود تلنگانہ و آندھرا میں ٹول ٹیکس کی وصولی

استثنی کے باوجود تلنگانہ و آندھرا میں ٹول ٹیکس کی وصولی

حیدرآباد۔21نومبر(سیاست نیوز) آندھرا و تلنگانہ کے محکمہ آر ٹی سی نے شہریوں کو لوٹنے میں کوئی کسر نہیں چھوڑی بلکہ حکومت ہند کے احکامات کے باوجود مسافرین سے ٹول ٹیکس وصول کیا گیا اور اس کا سلسلہ ہنوز جاری ہے۔ دونوں ریاستوں میں آرٹی سی مسافرین سے ٹول ٹیکس کے نام پر رقومات کی وصولی عوام سے دھوکہ دہی کے مترادف ہے کیونکہ حکومت ہند نے ملک کی تمام شاہراہوں پر ٹول ٹیکس معافی کا اعلان کردیا ہے۔ مرکز کی جانب سے اس اعلان کی مدت 24نومبر تک ہے لیکن اضلاع کے مسافرین سے آر ٹی سی نے ٹول ٹیکس کی وصولی کا سلسلہ جاری رکھا ہے۔ آر ٹی سی مسافرین سے وصول کیاجانے والا ٹول ٹیکس کروڑوں میں پہنچتا ہے اور یہ ٹول ٹیکس جمع کرتے ہوئے حکومت کو ادا کیا جاتا ہے لیکن جب حکومت نے ہی ٹول ٹیکس معافی کا اعلان کردیا تو اے پی ایس آر ٹی سی اور تلنگانہ آر ٹی سی کی جانب سے یہ ٹول ٹیکس عوام سے کیوں وصول کیا جارہا اور عوام کو دھوکہ دیتے ہوئے وصول کی گئی یہ دولت کسے جائے گی؟ ۔ آندھرا اور تلنگانہ میں مسافرین سے وصول کیا جانا والا ٹول ٹیکس ٹکٹ کے علاوہ ہوتا ہے اور اس کی تفصیل ٹکٹ میں درج ہوتی ہے اگر نادانستگی میں یہ ٹول ٹیکس وصول کیا گیا ہے تو کم از کم اس بات کا اعلان کیا جانا چاہئے کہ حکومت اور آر ٹی سی نے عوام سے کتنا پیسہ وصول کیا ہے اور جو وصولی کی گئی ہے اس کا کیا کیا جائیگا؟ ٹول ٹیکس معافی کے دوران وصول کی گئی رقم کو حکومت کو ادا کیا جائے گا یا پھر ریاستی حکومت اس کو فلاحی کاموں پر خرچ کریگی؟ دونوں ریاستوں میں آر ٹی سی کی جانب سے وصول کیا گیا ٹول ٹیکس اگر دانستہ طور پر وصول کیا گیا تو ان کے خلاف دھوکہ دہی کے تحت کاروائی ہونی چاہئے ۔ ٹول ٹیکس کی معافی کے باوجود یہ ٹیکس وصولی کا سلسلہ جاری رکھ کر آر ٹی سی بس مسافرین کو ہراساں کیا ہے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT