Wednesday , August 16 2017
Home / عرب دنیا / اسرائیلی فوج نے فلسطینی دواخانہ میں ایک شخص کو گولی ماردی

اسرائیلی فوج نے فلسطینی دواخانہ میں ایک شخص کو گولی ماردی

Relatives of Palestinian Abdullah al-Shalalda, who was killed by Israeli undercover forces during a raid at Al-Ahly hospital, mourn during his funeral in the West Bank village of Sair, north of Hebron November 12, 2015. Israeli undercover forces raided a hospital in the West Bank on Thursday and shot dead a Palestinian during an operation to detain another man suspected of carrying out a stabbing, the Palestinian health ministry and doctors said. REUTERS/Mussa Qawasma

ایک زخمی فلسطینی شہری کی گرفتاری میں رکاوٹ بننے پر کارروائی ‘ صیہونی فوج کا ادعا
رملہ ( فلسطین )12 نومبر ( سیاست ڈاٹ کام ) اسرائیلی فوج نے عام شہریوں کے بھیس میں مغربی کنارہ کے ایک دواخانہ پر حملہ کرتے ہوئے ایک فلسطینی شخص کو ہلاک کردیا ہے ۔ فلسطینی دواخانہ کے ایک عہدیدار نے یہ بات بتائی ۔ اسرائیلی فوج نے کہا کہ اس کے دستوں نے دواخانہ میں ایک شخص کو گولی ماردی ہے جبکہ وہ وہاں ایک مشتبہ شخص کو گرفتار کرنے پہونچے تھے ۔ اسرائیل کا کہنا ہے کہ یہ شخص چاقو سے حملوں کے واقعات میں مطلوب تھا ۔ الاہلی ہاسپٹل مغربی کنارہ کے ڈائرکٹر جہاد شاور نے کہا کہ زائد از 20 اسرائیلی خفیہ پولیس اہلکاروں نے خود کو عام شہری ظاہر کرتے ہوئے دواخانہ پر حملہ کیا تھا ۔ ان میں ایک خاتون بھی شامل تھی جو درد زہ کی اداکارہ کر رہی تھی ۔ یہ لوگ سرجیکل یونٹ میں گئے

جہاں انہوں نے اپنی بندوقیں تان لی تھیں جہاں اعظم صلاح الدین نامی فلسطینی شخص کا گولیوں کے زخم کی وجہ سے علاج کیا جارہا تھا ۔ ان فوجیوں نے اعظم صلاح الدین اور اس کے ایک بھائی کے ہاتھ باندھ دئے ۔ انہوں نے اعظم کے ایک اور بھائی 27 سالہ عبداللہ کو گولی مار کر ہلاک کردیا جبکہ وہ باتھ روم سے باہر آ رہا تھا ۔ شاور نے کہا کہ یہ ایک سنگین جرم ہے ۔ یہ بین الاقوامی قوانین کے مغائر ہے ۔ کسی کو بھی دواخانوں میں ایسی کارروائی نہیں کرنی چاہئے لیکن اسرائیل نے ایسا کیا ہے ۔ اسرائیلی فوج کا کہنا ہے کہ اس کے دستے دواخانہ میں اعظم صلاح الدین کو گرفتار کرنے پہونچے تھے جس پر الزام ہے کہ اس نے ایک اسرائیلی شخص کو چاقو گھونپ دیا تھا۔

TOPPOPULARRECENT